The news is by your side.

Advertisement

بھارت: دماغی بیماری سے 10 روز میں 53 بچے ہلاک

بہار: مودی کے بھارت میں ایک خطرناک دماغی بیماری نے ایک بار پھر بچوں کا شکار شروع کر دیا ہے، صرف 10 روز میں اب تک 53 بچے ہلاک ہو چکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست بہار کے علاقے مظفر پور میں ایک دماغی بیماری سے 53 بچے ہلاک ہو گئے ہیں، بتایا گیا ہے کہ یہ ہلاکتیں محض دس روز میں ہوئی ہیں۔

میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ خطرناک دماغی بیماری کے باعث زیر علاج بچوں کی تعداد چالیس سے زیادہ ہے، بچوں کو آئی سی یو میں رکھا گیا ہے اور انھیں بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ اس خطرناک دماغی بیماری کی وجہ لیچی فروٹ ہو سکتی ہے، رپورٹس کے مطابق دماغی بیماری لیچی کے موسم بچوں کو لاحق ہو رہی ہے۔

خیال رہے کہ بچے موسم گرما کا پھل لیچی بہت شوق سے کھاتے ہیں، ادھر امریکی ماہرین نے بتایا ہے کہ ایک قسم کا زہریلا مواد لیچی میں ہوتا ہے اور امکان ہے کہ اسی زہریلے مواد کی وجہ سے بچے شکار ہو رہے ہوں۔

مذکورہ دماغی بیماری کو مقامی طور پر چمکی بخار کہا جاتا ہے، جس کی علامات میں بخار، قے اور بے ہوشی شامل ہیں، بتایا گیا ہے کہ ضلع مظفر پور میں لیچی کی فصل سب سے زیادہ ہوتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت میں پہلی صف میں بیھٹنے پر طالب علم قتل

واضح رہے کہ 2014 میں جب اس ضلع میں 150 اموات ہوئیں تو لانسٹ گلوبل ہیلتھ ریسرچ نے تحقیقات کر کے معلوم کیا کہ اس بیماری کا تعلق لیچی سے ہے۔

ماہرین کے مطابق لیچی میں غیر معمولی مقدار میں امینو ایسڈ ہوتا ہے، جس کے زیادہ استعمال سے دماغ کو درکار گلوکوز شدید متاثر ہو جاتے ہیں۔

ایک خلیجی اخبار کی رپورٹ کے مطابق 2008 اور 2014 کے درمیان اس بیماری encephalitis سے اترپردیش، بہار میں 6 ہزار اموات ہوئی تھیں جب کہ 44 ہزار سے زائد کیسز سامنے آئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں