The news is by your side.

اسلام آباد میں ڈیڑھ سال میں بچوں سے زیادتی کے 55 واقعات

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ اسلام آباد میں ڈیڑھ سال میں بچوں سے زیادتی کے 55 واقعات پیش آئے ، جنسی درندوں نے ایک سے 5 سال کےبچوں پربھی رحم نہ کیا۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ کےاجلاس ہوا، وقفہ سوالات کےدوران وفاقی وزیر داخلہ نے سینیٹ میں تحریری جواب کرایا۔

تحریری جواب میں بتایا گیا کہ اسلام آباد میں ڈیڑھ سال میں بچوں سے زیادتی کے 55 واقعات ہوئے، جنسی درندوں نے ایک سے 5 سال کےبچوں پربھی رحم نہ کیا۔

وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ ایک سے پانچ سال عمر کی دو بچیوں اور ایک بچے کے ساتھ زیادتی ہوئی جبکہ اسلام آبادمیں 6سے 17سال کے 52 بچوں کیساتھ زیادتی کے واقعات ہوئے۔

تحریری جواب میں کہا گیا کہ 73ملزمان نامزد جبکہ 71 کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور 36 ملزمان کو چالان کے بعد جیل بھیج دیا گیا ہے۔

یاد رہے گورنر سندھ عمران  اسماعیل نے کہا  تھا کہ بچوں سے زیادتی کے مجرمان کو سزائے موت کے لیے قانون سازی کی گئی ہے، مجرمان کو سزائے موت دینے کا نفاذ جلد ہوگا۔

خیال رہے وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے بچوں سے زیادتی کے مجرمان کو سرعام پھانسی دینے پر اپوزیشن کے اعتراض کو مسترد کرتے ہوئے ریفرنڈم کروانے کی تجویز پیش کی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں