The news is by your side.

Advertisement

آسمان سے زمین کی طرف آتی ’اڑن طشتری‘ کی تصویر سامنے آگئی!

انگلینڈ کے جنوبی مغربی شہر ڈیون سے تعلق رکھنے والے طالب علم نے اڑن طشتری دیکھنے کا دعویٰ کردیا۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق انگلینڈ سے تعلق رکھنے والے 36 سالہ طالب علم میتھو ایوانس نے دعویٰ کیا کہ اُس نے رات کے آخری پہر سیاہ بادلوں پر پُراسرار روشنی دیکھی۔

نوجوان نے بتایاکہ وہ دسویں منزل پر واقع اپنے فلیٹ کی کھڑکی میں رات کے آخری پہر کھڑا ہوا تھا کہ اُسے آسمان پر اڑن طشتری اڑتی ہوئی نظر آئی۔

میتھو کا کہنا تھا کہ ’میں نے اڑن طشتری دیکھنے کے بعد اپنا موبائل نکالا تو دس سیکنڈ کے اندر ہی یہ غائب ہوگئی، میں اس کی صرف تصویر ہی لے سکا ہوں‘۔

طالب علم نے یہ تصویر سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر شیئر کی، جس کے بعد ایک بار پھر اڑن طشتری یا خلائی مخلوق کی زمین پر آمد و رفت کے حوالے سے چہ مگوئیاں شروع ہوگئیں۔

مزید پڑھیں: خلائی مخلوق سے متعلق ماہرین کا خطرناک دعویٰ

یہ بھی پڑھیں: انتظار ختم، امریکی انٹیلیجنس نے خلائی مخلوق سے متعلق خفیہ رپورٹ جاری کر دی

واضح رہے کہ اڑن طشتری یا خلائی مخلوق اب تک ایک افسانوی کردار ہے، جسے بچوں کے کارٹونز، فلموں یا سیریل میں استعمال کیا گیا ہے۔

نوجوان کی جانب سے شیئر کی جانے والی تصویر میں آسمان پر تکونی شکل کی تین چھوٹی لائٹوں (بلب) والی چیز نظر آرہی ہے ۔ میتھو کا کہنا تھا کہ ’میں نے جب تصویر بنائی تو اُس کا فیصلہ مجھ سے بہت زیادہ ہوگیا تھا، اسی وجہ سے ویڈٰو بھی ریکارڈ نہیں کرسکا‘۔

طالب علم نے کہا کہ ’وہ فضا میں معلق تھی اور جہاز کی طرح چل نہیں رہی تھی، وہ بہت آہستہ آہستہ اوپر سے نیچے کی طرف جارہی تھی، میں نے یہ منظر دس سیکنڈ خود دیکھا‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں