The news is by your side.

Advertisement

’9 سالہ بچی پُراسرار بیماری میں مبتلا‘ افسردہ داستان

کراچی کی 9 سالہ کمسن بچی ایمن لطیف پراسرار بیماری میں مبتلا ہوگئی جس کے باعث وہ چلنے پھرنے سے قاصر ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق 9 سالہ بچی ہڈیوں کو بھربھرا کردینے والی بیماری میں مبتلا ہے، ننھی بچی بیماری کے باعث چلنے پھرنے سے قاصر ہے اور زندگی کی جستجو میں بچی نے کئی خواب دیکھ رہے ہیں۔

کمسن ایمن کا کہنا ہے کہ مجھے میک اپ کرنے کا شوق ہے بہن کو دیکھ کر میک اپ اچھا لگتا تھا، سیلفی بنانے کا بھی شوق ہے۔

ایمن کے والد کرایے کا رکشہ چلا کر بچوں کی بیماری اور گھریلو اخراجات کو بمشکل ہی پورا کرپاتے ہیں۔

والد کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر کہتے ہیں یہ بچیوں کو ہڈیوں کی کمزوری کی پیدائشی بیماری ہے اور بیماری سے نجات کے لیے بچی کو ایک انجیکشن 25 ہزار کا لگوانا ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میں غریب ہوں 25 ہزار روپے کا انجیکشن نہیں خرید سکتا۔

اسی گھر میں موجود ایمن کی بہن بھی ہریانہ کی بیماری میں مبتلا ہے، بچی کے والد نے حکومت سے بچیوں کے علاج کے لیے مدد کی اپیل کی ہے۔

ماہرین صحت کے مطابق مردوں کے مقابلے میں عورتوں میں یہ مرض زیادہ پایا جاتا ہے۔ ایک اندازے کے مطابق پاکستان میں 75 سے 84 برس کی 97 فیصد جبکہ 45 سے 54 برس کی 55 فیصد خواتین آسٹیو پوروسس کا شکار ہیں۔

ماہرین صحت کے مطابق روزانہ 20 منٹ دھوپ میں گزارنے پر وٹامن ڈی تھری کی کمی کو پورا کیا جا سکتا ہے۔ انسانی جسم میں وٹامن ڈی تھری پہلے سے موجود ہوتا ہے جو سورج کی روشنی پڑنے سے متحرک ہو جاتا ہے۔ اس وٹامن سے ہڈیوں کو کیلشیم کی فراہمی کی جا سکتی ہے۔

کیلشیم دودھ ، مچھلی اور ہری سبزیوں سے بھی حاصل کیا جا سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں