The news is by your side.

Advertisement

پنجشیر میں 34 طالبان مارے جانے کا دعویٰ

کابل: سابق افغان وزیر دفاع نے پنجشیر میں 34 طالبان کے مارے جانے کا دعویٰ کیا ہے۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق سابق افغان وزیر دفاع نے پنجشیر میں 34 طالبان مارے جانے کا دعویٰ کیا ہے، بسم اللہ محمدی کا کہنا ہے کہ پنجشیر میں 65 طالبان زخمی بھی ہوئے ہیں۔

بسم اللہ محمدی کے مطابق طالبان نے منگل کی رات پنجشیر پر دوبارہ حملہ کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ لوگ بے فکر رہیں طالبان کو بھاری جانی نقصان پہنچایا ہے۔

مذاکرات میں ناکامی کے بعد پنجشیر میں طالبان اور شمالی اتحاد کے درمیان ہونے والی جھڑپوں کے باعث علاقے میں سخت خوف وہراس پھیل گیا ہے۔

واضح رہے کہ افغان ٹی وی کے مطابق طالبان اور پنجشیر کےرہائشیوں کے درمیان جھڑپیں گذشتہ رات سے جاری ہے، جن میں اب تیزی آگئی ہے، صوبہ کپیسا کی سرحد اور داخلی راستےگلبہار میں وقفےوقفےسےجھڑپیں ہورہی ہیں۔

افغان ٹی وی کے مطابق دونوں جانب سےجدید ہتھیاروں کا استعمال کیا جارہا ہے اور ایک دوسرے کے ٹھکانوں کونشانہ بنایا جارہا ہے، افغان ٹی وی نے پہاڑوں پربمباری اورفائرنگ کی فوٹیج بھی جاری کردی ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل پنجشیر میں طالبان اور شمالی اتحاد کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں سات طالبان مارے گئے تھے۔

یاد رہے کہ طالبان جنگجوؤں نے اس وادی کو کئی روز سے گھیرے میں لے رکھا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں