The news is by your side.

Advertisement

حکومت نے پارلیمان کا مشترکہ اجلاس مؤخر کردیا

اسلام آباد: حکومت نے کل ہونے والا پارلیمان کا مشترکہ اجلاس مؤخر کردیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وفاقی وزیر برائے اطلاعات فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر بتایا کہ انتخابی اصلاحات ملک کے مستقبل کا معاملہ ہے، ہم نیک نیتی سے کوشش کررہے ہیں کہ اتفاق رائے پیدا ہو، پارلیمان کے مشترکہ اجلاس کو اس مقصد کے لیے موخر کیا جارہا ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ اس سلسلے میں اسد قیصر کو اپوزیشن سے پھر رابطے کا کہا ہے، دوبارہ رابطے کا اس لیے کہا گیا ہے کہ متفقہ انتخابی اصلاحات کا بل لایا جاسکے۔

وفاقی وزیر نے لکھا کہ امید ہے کہ اپوزیشن ان اہم اصلاحات پر سنجیدگی سے غور کرے گی، امید ہے ہم مستقبل کے لیے مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرپائیں گے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ ایسا ہونے کی صورت میں ہم اصلاحات سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے۔

کیا قوم پوچھ سکتی ہے جہاد اچانک ملتوی کیوں کرنا پڑا، مریم نواز

مسلم لیگ ن کی مرکزی نائب صدر مریم نواز نے پارلیمان کا مشترکہ اجلاس موخر ہونے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ ابھی عمران خان تقریر جھاڑ رہے تھے کہ کل جہاد سمجھ کر ووٹ کریں، کیا قوم پوچھ سکتی ہے جہاد اچانک ملتوی کیوں کرنا پڑا۔

مریم نواز نے کہا کہ قوم ویسے تو سب جانتی ہے مگر پھر بھی پوچھنا تو بنتا ہے۔

دوسری جانب ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے فواد چوہدری کے ٹویٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ بھاگ گئے، فواد چوہدری ہمت کرکے سچ بولیں نمبر پورے نہیں ہوئے ہیں، اتحادی تو کیا اپنے ارکان بھی ووٹ دینے کو تیار نہیں ہیں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ ڈوبتی کشتی سے چھلانگیں لگانے کا آپ کا وقت ہوا چاہتا ہے، اپوزیشن سے بات چیت، اتفاق رائے کی بات آپ کو مشترکہ اجلاس بلانے کے بعد یاد آئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں