The news is by your side.

Advertisement

’افغان حکومت کو قبول کرانے کیلیے ازبکستان کیساتھ مل کر مہم چلائیں گے‘

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ افغانستان کے منجمد اثاثوں کی بحالی اور افغانستان انتظامیہ کو تسلیم کرانے کے لیے ازبکستان کے ساتھ مل کر مہم چلائیں گے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ازبک صدر کے ہمراہ مشترکہ نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ٹرانزٹ ٹریڈ سے پاکستان اور ازبکستان کو فائدہ ہوگا، ٹرانزٹ ٹریڈ سے افغانستان کے لوگوں کو بہت زیادہ فائدہ ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان کےاثاثےمنجمدہیں چاہتےہیں ٹرانزٹ ٹریڈسےکابل کوفائدہ ہو، پاکستان اور ازبکستان کے تعلقات سے سیاحت اور تجارت بڑھے گی۔

انہوں نے کہا کہ اسلاموفوبیا سےمتعلق مسلم ممالک کومل کراقدامات اٹھانےچاہئیں، آزادی اظہارکےنام پرمسلمانوں کوتکلیف پہنچائی جاتی تھی۔

عمران خان نے کہا کہ اسلامو فوبیا کے معاملے پر روسی صدراورکینیڈاکےوزیراعظم نےبھی جذبات کااظہارکیاجس پر ان کےشکرگزارہیں۔

وزیراعظم نے بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں مظالم ہورہے ہیں جس سے ازبک صدر کو آگاہ کیا، چاہتے ہیں اقوام متحدہ بھارت سے متعلق قراردادوں پر عمل کرائے۔

پاکستان کیساتھ اسٹریٹیجک تعاون کےفروغ کیلئےکام کررہےہیں،ازبک صدر

دوسری جانب ازبک صدر نے کہا کہ گرمجوشی سے استقبال پر وزیراعظم عمران خان اور پاکستان کے مشکور ہیں، ازبکستان پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دورہ پاکستان کا شدت سے انتظار تھا مگر کورونا کی وجہ سے تاخیر ہوئی، پاکستان اورازبکستان ثقافتی شعبوں کی بحالی کیلئےمل کرکام کریں گے، پاکستان کیساتھ اسٹریٹیجک تعاون کےفروغ کیلئےکام کررہےہیں۔

ازبک صدر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کیساتھ مختلف امورپرگفتگوتعمیری رہی،پاکستان کیساتھ اقتصادی اورتجارتی سطح پرتعلقات کیلئےاقدامات کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں