The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں کرونا کے 654 نئے کیسز رپورٹ، 22 اموات

لاہور: پنجاب میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کرونا وائرس کے 654نئے کیسز سامنے آئے اور 22 مریض انتقال کرگئے، صوبے بھر میں کرونا کیسز بڑھ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور سمیت پنجاب کے اسپتالوں میں کرونا کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، شہر کے 12 سرکاری اسپتالوں کو کرونا فوکل اسپتال بنایا گیا، پنجاب میں 5000 سے زائد آکسیجن بیڈز موجود ہیں۔ میو اسپتال میں سب سے زیادہ 75 وینٹی لیٹرز کرونا کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔

میو اسپتال میں تاحال 29 مریض انتہائی نگہداشت پر ہیں۔ شہر کے 12 سرکاری اسپتالوں میں 161 کرونا کے تشویشناک مریض زیرِ علاج ہیں۔ میو اسپتال میں کورونا کے مریضوں کے لیے 451 بیڈز مختص کیے گئے ہیں، جہاں سب سے زیادہ 89 مریض زیرِ علاج ہیں۔ جناح اسپتال میں کرونا کے مریضوں کے لیے 63 بیڈز مختص ہیں۔

ایم ایس ڈاکٹر افتخار کا کہنا ہے کہ جناح اسپتال میں کرونا کے 9 مریض زیر علاج ہیں۔ سروسز اسپتال میں کرونا مریضوں کے لیے 66 بیڈز مختص کئے گئے ہیں، سروسز اسپتال میں کرونا کے 42 مریض زیر علاج ہیں۔ جنرل اسپتال میں کرونا مریضوں کے لیے 18 بیڈ مختص کیے گئے ہیں، جنرل اسپتال میں کرونا کے 5 مریض زیر علاج ہیں۔

جبکہ گنگا رام اسپتال میں کرونا کے مریضوں کے لیے 26 بیڈز مختص کیے گئے ہیں، گنگا رام اسپتال میں کرونا کے 10 مریض زیر علاج ہیں۔ پنجاب بھر میں ٹوٹل آبادی کیلئے صرف 1280 وینٹی لیٹرز ہیں۔

چئیرمین کرونا ایڈوائرزی پروفیسر اسد اسلم نے خبردار کیا ہے کہ کرونا وائرس کی دوسری لہر دسمبر کے آخر میں شدت کے ساتھ آسکتی ہے، بچوں اور ضعیف افراد میں نمونیا ہونے سے اموات بڑھ سکتی ہیں، کیسز بڑھنے سے اسپتالوں میں سہولیات چوک ہو سکتی ہیں، ویکسین کے تاحال کوئی آثار نہیں، احتیاطی تدابیر ہی ویکسین ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وائرس کی مقامی منتقلی کو روکنے کیلئے ضروری ہے کہ محدود رہا جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں