The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کے 659ملازمین کی جعلی ڈگریوں کا انکشاف

اسلام آباد : قومی ایئرلائن پی آئی اے کے 659ملازمین کی جعلی ڈگریوں کا انکشاف ہوا جبکہ 2017میں قومی ایئرلائن کو 43 ارب 65 کروڑ روپے کا خسارہ ہوا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا، اجلاس میں پی آئی اے میں خسارے کی تفصیلات قومی اسمبلی میں پیش کی گئی۔

وزیر انچارج ہوا بازی ڈویژن نے قومی اسمبلی میں تحریری جواب جمع کرادیا، جس میں پی آئی اےکے659ملازمین کی جعلی ڈگریوں کا انکشاف ہوا، جعلی ڈگریوں پر391 ملازمین کو برطرف کر دیا گیا جبکہ 251 ملازمین کےکیسز عدالتوں میں زیر سماعت ہیں اور 17 ملازمین کے خلاف محکمانہ کارروائی کی جارہی ہے۔

تحریری جواب میں بتایا گیا کہ 2017 میں قومی ایئرلائن کو 43 ارب 65 کروڑ روپے کا خسارہ ہوا، 2008 میں پی آئی اے کو39ارب98 کروڑ روپے کا خسارہ ہوا۔

جواب میں بتایا گیا کہ 2009میں قومی ایئرلائن کو بھی 13ارب31کروڑ کا خسارہ ہوا، 2010 میں خسارہ 8ارب58کروڑ روپے، 2011 میں 28ارب3کروڑ روپے رہا، 2012 میں 29ارب 76کروڑ جبکہ 2013 میں 42ارب 98 کروڑ روپے خسارہ رہا۔


مزید پڑھیں : پی آئی اے کی نجکاری رواں سال جون تک مکمل کرلی جائے گی


یاد رہے کہ حکومت نے پی آئی اے کی نجکاری کے لئے کئی مرتبہ کوشش کر چکی ہے جبکہ ایک بار پھر ادارے کی نجکاری کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

وزیر برائے نجکاری دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ اس بار ادارے کی نجکاری کو ہر حال میں مکمل کیا جائے گا، خسارے میں چلنے والے اداروں کی نجکاری سے سالانہ 600 ارب روپے بچائے جاسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ سنہ 2016 میں پی آئی اے کو پرائیوٹ لمیٹڈ بنا کر نجکاری کی جانی تھی تاہم ملازمین کے احتجاج کے باعث نجکاری روک دی گئی تھی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں