site
stats
انفوٹینمنٹ

مردہ قرار دی جانے والی خاتون دوبارہ زندہ

وارسا: جیسے اللہ رکھے اُسے کون چکھے،  پولینڈ میں مردہ قرار دی جانے والی ایک 91 سالہ خاتون مردہ خانے میں دوبارہ زندہ ہوگئی۔

رپورٹ کے مطابق خاتون کی بھانجی جب صبح جب گھر آئیں تو یعنینا یکاکووچ  بے ہوش پڑی تھی ، کوئی حرکت نہیں کر رہی ہیں اور نہ ہی ان کی سانس چل رہی ہے، اس تشویش پر انھوں نے ڈاکٹر کو بلایا،  ڈاکٹر نے  معائنے کے بعد خاتون کو مردہ قرار دے دیا، جس کے بعد یعنینا یکاکووچ کو مردہ خانے منتقل کیا گیا لیکن کچھ دیر بعد ان کے جسم کو حرکت کرتا دیکھ کر عملے کے ارکان متوجہ ہوئے اور حیران رہ گئے،  یعنینا یکاکووچ  زندہ تھی، جس کے بعد فوراً بعد ان کے گھر فون کیا گیا جب کہ گھر والے بھی یہ خبر سن کر حیرت زدہ رہ گئے۔

یعنینا یکاکووچ  کے خاندان والوں نے ان کی آخری رسومات کی ادائیگی کی تیاریاں شروع کر دی تھی لیکن چند گھنٹے بعد مردہ خانے کے عملے نے یعنینا یکاکووچ کی بھانجی کو فون پر ان کے زندہ ہونے کی اطلاع دی۔ یعنینا یکاکووچ کے مطابق جب وہ واپس گھر پہنچی تو انھوں نے اپنے رشتہ داروں کو بتایا کہ وہ معمول کے مطابق محسوس کر رہی ہیں تاہم وہ اس بارے میں آگاہ نہیں تھیں کہ وہ قبر میں پہنچنے سے کچھ ہی فاصلے پر تھیں۔

مردہ خانے سے گھر پہنچنے پر یعنینا یکاکووچ نے سردی محسوس کرنے کی شکایت کی تو انھیں سوپ اور پین کیک دیا گیا، یعنینا یکاکووچ کا معائنہ کرنے والے ڈاکٹر بھی حیران  رہ گئے کہ یہ ہوا کیا کیونکہ خاتون کے دل کی دھڑکن بند تھی نہ ہی وہ سانس لے رہی تھیں۔

انھوں نے کہا کہ انھیں یقین تھا کہ ان کی موت واقع ہو چکی ہے۔ یعنینا یکاکووچ کی بھانجی کے مطابق ان کی خالہ کو کچھ معلوم نہیں ہوا کہ ان کے ساتھ کیا ہوا کیونکہ وہ دماغی خلل کی بیماری کے آخری مرحلے پر ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top