The news is by your side.

Advertisement

80 لاکھ گھرانوں کو بلاتفریق انصاف کارڈ فراہم کیا جائے گا، حماد اظہر

اسلام آباد : وفاقی وزیر برائے معاشی امور حماد اظہر نے کہاہے کہ لاہور سے انصاف کارڈ کا آغاز کررہے ہیں، پنجاب میں تقریباً 4 کروڑ افراد انصاف صحت کارڈ ست مستفید ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رہنما و وفاقی وزیر برائے معاشی امور حماد اظہر نے جاری بیان میں کہا ہے کہ انصاف کارڈ وزیر اعظم پاکستان عمران خان صاحب کا وعدہ تھاجس کا آغاز لاہور سے کررہے ہیں، انصاف کارڈ کے حامل افراد 7 لاکھ 20 ہزار تک کا علاج نجی اسپتالوں میں کرواسکیں گے۔

حماد اظہر نے واضح کیا کہ انصاف کارڈ کی سہولت80 لاکھ خاندانوں کو فراہم کی جائے گی جبکہ صرف لاہور میں ساڑھے 4 لاکھ گھروں کو کارڈ کا اجراء کیا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ نصاف صحت کارڈبلاتفریق کسی بھی شخص کودیاجائےگا۔

وفاقی وزیر برائے معاشی امور کا کہنا تھا کہ ملکی معیشت سےمتعلق سخت فیصلے کرنے پڑے جس کے بعد روپےکی قد رمیں بہتری آئی ہے، نچلے طبقے کو اوپر لانا ریاست کی ذمہ داری ہے۔

انہوں نے سابقہ حکومتوں پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ خزانہ سوچ رہا ہے کہ ابھی تک ہمیں کوئی لوٹنے نہیں آیا، مسلم لیگ نواز خزانے کو خالی چھوڑ کر گئی تھی لیکن موجودہ حکومت نے جو مشکل فیصلے کیے اس کے ثمرات نظر آرہے ہیں۔

حماد اظہر نے واضح کیا کہ حکومت اب تک 10 ارب ڈالر کا قرضہ واپس کرچکی ہے انشاءاللہ معیشت کے اندر استحکام نظر آئے گا، ملکی استحکام کو کسی طور خطرے میں نہیں ڈالا جائے گا تمام ادارے ایک پیج پر ہیں اب یہ بات کسی کو نظر آئے یا نہ آئے5 سال کے اندر تمام ادارے مشترکا کاوش سے اس ملک کو عظیم تر بنائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بجلی کی قیمتیں بڑھیں ضرور ہیں لیکن 82 ارب روپے کی بجلی چوری بھی روکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارےملک کی 70فیصدآبادی زراعت سےوابستہ ہے،صنعت کاروں سےپوچھیں کہ میٹنگ کیسی رہی،ملاقات میں کاروباری حضرات،صنعت کارموجودتھے، اسی لیے صنعتکاروں نےاس بات کا اعتراف کیاہے کہ واقعی حکومت کومشکل فیصلےکرنےپڑے۔

حماد اظہر کا کہنا تھا کہ مدارس کےبچوں کو سیاسی ہتھکنڈوں میں استعمال ہونےنہیں دیں گے۔

وفاقی وزیر برائے معاشی امور کا کہنا تھا کہ 29ممالک سےڈیٹاآیاہے،ابھی بھی پاکستانیوں کے11ارب ڈالرباہرہیں،سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈارنےاسمبلی فلورپرخود کہاتھا200ارب ڈالربیرون ممالک پڑےہیں۔

حماد نےکہا کہ انہیں اقامہ لینےمیں اس لیےمزاآتاتھاکیونکہ ان کی تفصیل نہیں ملتی تھی۔

انہوں نے مزید کہ بھارت نےایف اےٹی ایف کوجیسےاستعمال کیااب نہیں کرسکےگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں