site
stats
پاکستان

پنجاب پولیس: آﺅٹ آف ٹرن ترقی پانے والے 82 افسران عہدوں سے برطرف

لاہور: انسپیکٹر جنرل آف پولیس پنجاب نے سپریم کورٹ کے حکم پر عمل کرتے ہوئے آﺅٹ آف ٹرن ترقی پانے والے 82 پولیس افسران کو عہدوں سے ہٹا کر او ایس ڈی بنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق آؤٹ آف ٹرن پروموشن کیس کے حوالے سے پنجاب پولیس میں بڑے پیمانے پر اکھاڑ پچھاڑ شروع ہو گئی،آئی پنجاب مشتاق احمد سکھیرا نے ایس پی سی آئی اے عمر ورک سمیت او ایس ڈی ہونے والے تمام پولیس افسران کو سٹی پولیس آف آفس رپورٹ کرنے کی ہدایت جاری کر دی۔

آئی جی کے حکم پر لاہور پولیس کے طاقتور ترین ایس پی عمر ورک کو بھی عہدے سے ہٹا دیا گیا وہ 8 سال سے زائد ایس پی سی آئی اے کے عہدے پر تعینات تھے۔

1

دیگر تبدیل ہونے والے افسران میں ایس پی پی ایچ پی ملتان شاہد رزاق، ایس پی اے وی ایل ایس اویس ملک، ڈی پی او خوشاب فیصل گلزار ،ایس پی سی آئی اے فیصل آباد اعجاز شفیع ڈوگر، ٖڈی پی او منڈی بہاء الدین راجہ بشارت بھی شامل ہیں جب کہ ایڈیشنل ایس پی سٹی گوجرانوالہ طاہر مقصود، ایس پی انویسٹی گیشن خانیوال نعیم الحسن اور ایس پی ایس پی یو پنجاب جماعت علی بخاری کو او ایس ڈی کر دیا گیا۔

2

اسی طرح ایس ایس پی آپریشنز راولپنڈی کرامت اللہ ملک، ڈی پی او گجرات رائے ضمیر الحق ، ایس پی اسپیشل برانچ امیر تیمور، ایس پی ایس پی یو سینٹرل سید مختار حسین،ایس پی پی ایچ پی فیصل آباد فاروق احمد،کمانڈنٹ لاہور رنگ روڈ پولیس محمد قاسم، ایڈیشنل ایس پی سیالکوٹ مسز نسیم چوہدری ،ڈی ایس پی ٹریفک ریجن سرگودھا مسرور احمد، ایس پی پی ایچ پی ڈی جی خان کفایت اللہ،ایڈیشنل ایس پی صدر فیصل آباد محمد ممتاز ،ایس پی وی آئی پی سیکیورٹی امجد محمود سمیت ڈی ایس پیز کے عہدے پر کام کرنے والے 65 افسران بھی او ایس ڈی بنا دئیے گئے ۔

3

واضح رہے کے تمام افسران کو آؤٹ آف ٹرن پروموشن کیس کے سلسلے میں عہدوں سے ہٹایا گیا۔ سپریم کورٹ نے رواں سال فروری میں آؤٹ آف ٹرن پروموشنز کالعدم قرار دیتے ہوئے ایسے تعینات افراد کو عہدوں سے ہٹانے کاکا حکم دیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top