The news is by your side.

پی ٹی آئی ورکرز پر تشدد اور فائرنگ : ن لیگ کے 85 کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج

فیصل آباد: پی ٹی آئی ورکرز پر تشدد اور فائرنگ کے الزام میں مسلم لیگ ن کے 85 کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب کے شہر فیصل آباد کے علاقے ماموں کانجن میں عمران خان پر قاتلانہ حملے کے خلاف احتجاج کرنے والے پی ٹی آئی ورکرز پر تشدد اور فائرنگ کا واقعہ پیش آیا۔

جس کے بعد مقامی شہری قدرت اللہ کی مدعیت میں ماموں کانجن پولیس اسٹیشن میں مسلم لیگ ن کے 85 کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

درج مقدمےمیں تین دفعات شامل کی گئی ہیں، جن میں مسلم لیگ کے دس کارکن اور 75 نامعلوم افراد ملزمان نامزد کئے گئے ہیں۔

مدعی کا کہنا ہے کہ ملزمان کے تشدد سے میرے بھتیجے کی آنکھ ضائع ہوگئی ہے۔

یاد رہے فیصل آباد میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے لانگ مارچ کے دوران پارٹی سربراہ عمران خان پر حملے کے خلاف دھرنے پر نامعلوم حملہ آوروں نے فائرنگ کی تھی۔

پی ٹی آئی کے رہنما ابوبکر نے بتایا کہ حملہ آور جیپ میں آئے اور احتجاج کے شرکاء پر فائرنگ کی، جس میں سابق وفاقی وزیر فرخ حبیب اور ایم پی اے میاں وارث بھی موجود تھے۔

ابوبکر کا مزید کہنا تھا کہ حملہ آور فائرنگ کرنے کے بعد وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کے کیمپ کی طرف بھاگ گئے۔پولیس پر کہیں اور سے ہدایات لینے کا الزام لگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں