The news is by your side.

Advertisement

شکارپور امام بارگاہ حملے کے مرکزی کردار کے دورانِ تفتیش اہم انکشافات

شکار پور: سندھ پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے شکار پور امام بارگاہ خود کش حملے کے مرکزی کردار خلیل بروہی عرف سکندر نے دوران تفتیش اہم انکشافات کئےہیں۔

شکار پور خو دکش حملے کے ماسٹر مائنڈ خلیل بروہی عرف سکندر نے دوران تفتیش بتایا ہے کہ وہ لشکرِ جھنگوی کے استاد اسلم پنجابی گروپ کے ساتھ کام کرتے ہیں۔

ملزم نے اعترافی بیان میں کہا ہے کہ اس کے گروپ نے درگاہ حاجن شاہ ماڑی پر بم رکھا تھا ، جسے ریموٹ کے ذریعے اڑایا گیا، حاجن شاہ درگاہ پر حملے میں پیر حاجن شاہ سمیت چھ افراد جاں بحق ہوئے تھے۔

ملزم خلیل بروہی نے تفتیشی ٹیم کو درگاہ پر بم رکھنے کے مقام کی نشاندہی بھی کرائی، سانحہ شکار پور کے دوسرے ملزم علی شیر بروہی کے چھوٹے بھائی پیر بخش بروہی نے سابق ایم این اے ڈاکٹر ابراہیم جتوئی پر خود کش حملہ کیا تھا، جس میں ایس ایچ او سمیت پانچ جاں بحق ہوئے تھے۔

دہشتگرد رسول بخش بروہی اور خلیل بروہی کا تعلق ڈیرہ مراد جمالی بلوچستان سے ہے۔

اس سے قبل ملزمان کی نشاندہی پر رنی کوٹ میں قائم بارود بنانے کی فکٹری پکڑی گئی تھی ، حساس اداروں کو اس فیکٹری سے بم بنانے کا طریقہ اور ایک ڈائری ملی جبکہ بال بیرنگ ،ڈیٹونیڑ اور بارود کی بھاری مقدار بر آمد کی گئی، ذرائع کے مطابق بارودی مواد سے بیس خود کش جیکٹس بن سکتی تھیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں