The news is by your side.

Advertisement

حکومت کی خواہش ہے کہ ایم کیوایم کو ساتھ لیکر چلے، سعد رفیق

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماء اور وفاقی وزیرِ خواجہ سعدرفیق نے پیر کو رات گئے اسلام آباد میں ایم کیوایم کی مذاکراتی کمیٹی کے ارکان سے ان کی قیام گاہ پر دوبارہ ملاقات کی اور ایم کیوایم کی جانب سے سینیٹ کے انتخابات میں پیپلزپارٹی اور دیگراپوزیشن جماعتوں کے متفقہ امیدواروں کی ممکنہ حمایت کے فیصلے پر تفصیلی تبادلۂ خیال کیا۔

الطاف حسین نے ہدایت کی کہ ایم کیو ایم کا وفد وزیراعظم کے ظہرانے میں ضرور شریک ہو ۔

اسلام آباد میں ایم کیوایم کی مذاکراتی کمیٹی کے ارکان سے ملاقات میں خواجہ سعدرفیق نے کہا کہ دھرنوں کی سیاست کے دوران ایم کیوایم نے ملک میں جمہوریت کو ڈی ریل ہونے سے بچانے کیلئے جومثالی کردار ادا کیا، حکومت اس کی معترف ہے اور حکومت کی خواہش ہے کہ وہ ایم کیوایم کوساتھ لیکر چلے۔

ایم کیوایم کی مذاکراتی کمیٹی نے خواجہ سعدرفیق سے کہا کہ ایم کیوایم اپنا فیصلہ صرف اور صرف جمہوریت کے استحکام اور ملک وقوم کے مفاد میں کرے گی۔

ایم کیوایم نے اپنا نقطہء نظر پی پی پی کے شریک چیئرمین کے سامنے بھی کھل کررکھا ہے اورہم ان کے جواب کی روشنی میں کسی نتیجہ پرپہنچ رہے ہیں۔

الطاف حسین نے بھی خواجہ سعد رفیق سے تفصیلی گفتگو کی، انہوں نے خواجہ سعدرفیق سے کہا کہ میری خواہش ہے کہ پاکستان سے دہشت گردی کاخاتمہ ہو، ملک ترقی کرے اورہم جو بھی فیصلہ کریں گے وہ ملک وقوم کے مفاد میں ہی کریں گے۔ ہم آپریشن ضرب عضب میں حکومت اورمسلح افواج کے شانہ بشانہ ہیں اورملکی استحکام کی خاطر اپناکردار اداکرتے رہیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں