The news is by your side.

Advertisement

کراچی :آرام باغ میں برہانی مسجد کے باہر دھماکہ، دوافراد جاں بحق، 7 زخمی

کراچی :آرام باغ میں بوہری برادری کی صالح مسجد کے باہر دھماکہ ہوا، جس کے نتیجے میں دو افراد جاں بحق اور7 زخمی ہوگئے۔

دھماکہ اتنا زور دار تھا کہ آواز دور دور تک سنی گئی ، بند دکانوں کے شٹر اڑ گئے جبکہ کئی موٹر سائیکلیں تباہ ہوگئیں  پولیس اور ریسکیو ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں۔

پولیس کے مطابق دھماکہ اس وقت ہوا جب نمازی نمازِ جمعہ پڑھ کر باہر آرہے تھے، دھماکے کے بعد افراتفری مچ گئی، زخمیوں کو سول اسپتال منتقل کیا جارہا ہے، 4زخمیوں کی حالت تشویشناک ہیں۔

دھماکے کے بعد کراچی کے اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کرکے ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل اسٹاف طلب کرلیا گیا، شہید ہونیوالے ایک شخص کی شناخت شبیر حسین مڈوالا کے نام سے ہوئی ہے۔

ابتدائی رپورٹ کے مطابق دھماکہ موٹر سائیکل میں نصب کیا گیا تھا، ڈی آئی جی ساؤتھ عبدالخالق شیخ کا کہنا تھا کہ دھماکا ٹائم ڈیوائس سے کیا گیا۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ نے اپنی ابتدائی رپورٹ میں کہا ہے کہ دھماکے میں تین سے ساڑھے تین کلوگرام بارودی مواد استعمال کیاگیا اور اِس میں نٹ بولٹ اور چھرّے بھی استعمال کئے گئے ہیں ۔

واقعے کے حوالے سے برہانی برادری کا کہنا ہے کہ پولیس نے ہمیں سیکیورٹی فراہم نھیں کی۔

عینی شاہدین کے مطابق صالح مسجد میں نماز کی ادائیگی کے بعد نمازی باہر آرہے تھے کہ اس دوران ایک بج کر پچاس منٹ پر دھماکہ ہوگیا، جس سے کئی نمازی زخمی ہوگئے جبکہ دھواں پھیل گیا، گیٹ کے قریب کھڑی موٹرسائیکلیں گرگئیں ۔

کراچی میں دھماکے کے بعد تفتیشی افسران جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور دھماکےکی جگہ کا معائنہ کیا، سی آئی ڈی کے افسر راجہ عمر خطاب نے میڈیا کو بتایا کہ بظاہر ٹارگٹ بوہری کمیونٹی کی مسجد تھی۔

آرام باغ صالح مسجدکے باہردھماکےکی تحقیقات کاآغازکردیاگیا ہے۔ انچارج سی آئی ڈی  راجہ عمر خطاب نے کہا ہےکہ موٹرسائیکل صالح مسجد کے باہرکھڑی کی گئی۔

دھماکےمیں نٹ بولٹ اوربال بیرنگ استعما ل کئےگئے۔ ابتدائی تحقیقات کے مطابق دھماکےمیں استعمال ہونے والی موٹرسائیکل کامالک کیماڑی کارہائشی ہے۔

ایس ایس پی فاروق اعوان کاکہنا ہےکہ بم دھماکے میں استعمال موٹرسائیکل کانمبرمل گیاہے۔ تحقیقاتی اداروں نےدھماکےکی جگہ سے شواہدجمع کئے ہیں اور ان شواہد کی روشنی میں تحقیقات کا دائرہ وسیع کیا جارہا ہے۔

علاوہ ازیں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین نے برہانی مسجد کے باہر بم دھماکے کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کی ہے اور بم دھماکے میں متعدد افراد کے جاں بحق اور زخمی ہونے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔

الطاف حسین نے کہاکہ یوحناآباد لاہور میں پرامن اور محب وطن مسیحی برادری کی دوعبادت گاہوں کو نشانہ بنانے کے بعد اب ایک اور پرامن مذہبی برادری کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

دہشت گردی کے یہ واقعات اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہیں کہ پاکستان میں مذہبی اقلیتوں اور چھوٹی براردریوں کی جان ومال عدم تحفظ کا شکار ہے اور سفاک دہشت گردوں کی جانب سے بے گناہ شہریوں کو دہشت گردی کا نشانہ بناکر پاکستان کو غیرمستحکم اور دنیا بھر میں بدنام کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں