The news is by your side.

Advertisement

کارگل ایک عظیم فتح تھی جسے شکست میں تبدیل کردیا، پرویزمشرف

کراچی: سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کا کہنا ہے کہ کارگل کا معرکہ ایک عظیم فوجی فتح تھی جسے سیاسی شکست میں تبدیل کردیا گیا۔

آل پاکستان مسلم لیگ کے یوتھ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے جنرل (ر) پرویز مشرف کا کہنا تھا کہ پاکستان کی صورتحال آج ویسی ہی ہے جیسا میں بحیثیت صدر اپنے آخری خطاب میں کہا تھا لیکن میں نے سوچا بھی نہیں تھا کہ حالات اس قدر خراب ہوجائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی بدقسمتی ہے کہ ملک کو کبھی قابل اور مخلص سیاسی قیادت نہیں ملی ، آج ملک میں جو کچھ ہورہا ہے قوم کے سامنے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ معیشت کا برا حال ہے بجلی اور گیس تو دور آج پانی بھی میسرنہیں ہے۔

معرکہ کارگل پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کارگل میں ہم نے پانچ اہم اسٹریٹجک جگہوں پربھارتی علاقوں میں کافی اندر تک قبضہ کرلیا تھا جن میں سے صرف ایک علاقے میں وہ 50 فیصد علاقہ واپس لے پائے تھے باقی چار کی انہیں خبر بھی نہیں تھی۔

سابق صدر کا کہنا تھا کہ اگر حکومت ساتھ دیتی تو کارگل کی جنگ دنیا کی تاریخ ایک بڑی فوجی فتح تھی جسے سیاسی میدان میں شکست میں تبدیل کردیا گیا۔

انہوں نے تقریر کے دوران نوجوانوں کے جذبات کو مہمیز کرنے کے لئے شعر پڑھا

بھنور سے لڑو ، تند لہروں سے الجھو
کہاں تک چلو گے کنارے کنارے

سابق صدر نے کراچی میں اسماعیلی کمیونٹی پر ہونے والے حملے شدید مذمت کرتے ہوئے متاثرین سے اظہارِ یکجہتی کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ایک ایسا ملک ہے جو کہ تمام تر وسائل سے مالامال جوہری قوت ہے افسوس ناک امر یہ ہے کہ ہماری انڈسٹریاں بند ہورہی ہیں اور ہم زوال کی طرف جارہے ہیں۔

انہوںنے کہا کہ معاشی، سماجی اورسیاسی مسائل کے حل کے لئے قیادت میں جذبہ ہونا چاہیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں