The news is by your side.

Advertisement

بھارتی شہریوں کی بے حسی مرتے شخص کے ساتھ سیلفیاں لیتے رہے

نئی دہلی: بھارت میں مشتعل ہجوم نے چوری کے الزام میں ایک شخص کو بہیمایہ تشدد کے بعد موت کے گھاٹ اتار دیا، اس دوران اردگرد کھڑے افراد سیلفیاں لینے میں مصروف رہے۔

تفصیلات کے مطابق یہ افسوس ناک واقعہ بھارت کے جنوبی ریاست کیرالہ میں اس وقت پیش آیا جب مادھو نامی شخص پر ہجوم نے چوری کا الزام لگا کر تشدد کے بعد قتل کردیا، پورے واقعے کے دوران آس پاس موجود لوگ سیلفیاں اور تصویریں بناتے رہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق مادھو کو پہلے زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں وہ جانبر نہ ہوسکا۔ قتل کیا جانے والا شخص دیہی باشندہ تھا، پولیس نے واقعہ کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے دو افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔

سیلفی لینے والے ذہنی مریض ہیں، ماہرین نفسیات کا انکشاف

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پولیس حکام نے کہا کہ واقعے کی اطلاع ملتے ہی اہلکار بروقت جائے وقوع پہنچے، جس کے بعد فوری کارروائی شروع کی، پولیس قتل میں ملوث دیگر افراد کی تلاش کے لیے بھی چھاپے مار رہی ہے۔

ریاست کیرالہ کے وزیر اعظم نے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حملہ آوروں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا، ایسے واقعات کیرالہ کے ترقی پسند معاشرے پر دھبہ ہیں۔

نئی دہلی:بھارت میں حکومتی بے حسی، متاثرہ کیمپ میں34بچے ہلاک

علاوہ ازیں بھارتی اداکار ماموتی نے بھی واقعہ سے متعلق افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مادھو کی ہلاکت کا ذمہ دار ہمارا نظام ہے، یہ کیسا نظام ہے جہاں ہجوم مل کر خود انصاف کا فیصلہ کرے، جو شخص دوسروں پر حملہ کرے وہ انسان نہیں ہوسکتا۔

انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیموں اور سماجی راجی رابطے کی ویب سائٹ پر صارفین نے بھی انسانیت سوز واقعے کی کھل کر مذمت کی جارہی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں