The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں یتیموں کی تعداد چار ملین کے قریب ہے، قومی اسمبلی اجلاس میں انکشاف

پندرہ رمضان المبارک کو یتیموں کے دن کے طور پر منانے کی قرارداد متفقہ طور پر منظور

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومتی رکن نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں یتیموں کی تعداد چالیس لاکھ کے قریب ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومتی رکن ملک ابرار نے قرار داد پیش کرتے ہوئے کہا کہ پندرہ رمضان المبارک کو یتیموں کے دن کے طور پر منایا جائے، جسے متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں ایم کیو ایم کی مردم شماری کی تھرڈ پارٹی آڈٹ مؤخر کرنے سے متعلق بھی قرارداد لائی گئی، پیپلز پارٹی کے ستار بچانی نے قرارداد پیش کرنے کی مخالفت کردی۔

شیخ صلاح الدین نے کہا کہ حکومت نے تھرڈ پارٹی آڈٹ کرانے سے انکار کر دیا ہے، جب کہ ستار بچانی کا کہنا تھا کہ مشترکہ مفادات کونسل نے فیصلہ کیا، معاملہ آئندہ حکومت دیکھے گی۔

دوسری طرف قومی اسمبلی کے اجلاس میں شہریار آفریدی نے اسپیکر کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ میں نے آپ کے خلاف مہم چلائی، ٹی وی شو میں تنقید کی لیکن آپ کا جو رویہ رہا اس پر شکرگزار ہوں۔

پاکستان تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری نے کہا کہ آج ورلڈ یو این پیس کیپرز ڈے ہے، ہمیں قیام امن کے لیے اپنے جوانوں کو خراج تحسین پیش کرنا چاہیے، اقوام متحدہ کے پیس کیپنگ مشن میں ہمارے جوانوں نے قربانیاں دیں۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حاضری، اراکین کی پانچ سالہ رپورٹ جاری


ایم کیو ایم کے رشید گوڈیل کا کہنا تھا کہ پانی کے مسئلے پر فوری توجہ دینے کی ضرورت ہے، چین ربڑ بچھا کر چھوٹے ڈیم بنا رہا ہے تاکہ پانی جذب نہ ہو جب کہ ہم پانی کی قلت دور کرنے کے لیے کچھ نہیں کر رہے۔

نصرت سحرعباسی نے کہا کہ اس ایوان پر 6 ارب روپے خرچ کردیے گئے، اتنی بڑی اسمبلی ہے کہ میں پوری نہیں گھوم سکی، اس پر اتنے روپے خرچ کرنا میرے خیال میں ٹھیک نہیں، اس سے کوئی اسپتال بن جاتا تو زیادہ اچھا ہوتا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں