The news is by your side.

Advertisement

داعش کا سربراہ ابوبکر البغدادی زندہ ہے: قریبی ساتھی کا انکشاف

داعش کا خاتمہ کیے بغیر امریکی فوج شام سے کبھی نہیں جائے گی: سربراہ فرانسیسی فوج

بغداد: داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی کے زندہ ہونے کی ایک اور خبر سامنے آگئی ہے، البغدادی کے ایک قریبی ساتھی نے انکشاف کیا ہے کہ وہ زندہ ہیں۔

تفصیلات کے مطابق عراق میں سپریم جوڈیشل کونسل نے کہا ہے کہ تحقیقات کی مرکزی عدالت نے داعش سربراہ کے ایک قریبی ساتھی کے اعترافات کا اندراج کیا ہے۔

کونسل کے مطابق ملزم نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے گزشتہ جولائی کو البغدادی سے آخری بار ملاقات کی تھی اور اس سے قبل ان کی ملاقاتیں تسلسل کے ساتھ ہوتی رہی ہیں۔

کونسل کا کہنا تھا کہ ملزم کے اعتراف کے مطابق وہ داعش کی نگرانی کرنے والی جنرل کمیٹی کا رکن ہے اور کئی مزید عہدوں پر کام کیا ہے۔

کونسل کے نمائندے کا کہنا تھا کہ مذکورہ ملزم کو ترکی میں گرفتار کیا گیا ہے جس میں ترک سیکورٹی اداروں اور عراقی انٹیلی جنس کی مشترکہ کوششیں شامل تھیں۔ کونسل نے کہا کہ البغدادی کے حالیہ مقام کے بارے میں متضاد معلومات ہیں۔ واضح رہے کہ امریکی سلامتی اداروں کا کہنا ہے کہ شام اور عراق میں داعش پر قابو پانے کے باوجود تنظیم اب بھی ایک خطرہ ہے۔

خیال رہے کہ داعش کے سربراہ کے زندہ ہونے کی خبریں اس سے قبل بھی آتی رہی ہیں تاہم ان کی طرف سے کوئی آڈیو یا ویڈیو پیغام جاری نہیں ہوا۔ رواں سال فروری میں عراقی انٹیلی جنس چیف نے کہا تھا کہ البغدادی شام میں موجود ہیں اور ایک فضائی حملے میں ان کی ٹانگ زخمی ہوچکی ہے۔

داعش کا سربراہ ابوبکر البغدادی زندہ ہے، کرد حکام

دوسری طرف فرانسیسی فوج کے سربراہ فرانسوا لیوکوانٹا نے کہا ہے کہ سوچ بھی نہیں سکتے کہ امریکی فوج داعش کا خاتمہ کرنے سے قبل شام سے نکل جائے گی۔ ہماری اولین ترجیح داعش کا خاتمہ ہے اس لیے امریکیوں کے ساتھ ہمارا شام میں رہنا ضروری ہے۔ امریکی فوج شام سے کبھی نہیں جائے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کے آغاز میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا تھا کہ امریکا جلد ہی شام میں موجود اپنے فوجیوں کو وطن واپس بلا لے گا۔ فرانسیسی فوج کے سربراہ کا کہنا تھا کہ مجھے نہیں لگتا کہ داعش کو شکست دیے بغیر امریکی ملک چھوڑیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں