The news is by your side.

Advertisement

خلیفہ ہارون الّرشید کے عہد کا سکّہ دریافت

عباسی خلیفہ ہارون الّرشید کا عدل و انصاف، رعایا پروری اور ان کی نیک دلی ہی مشہور نہیں بلکہ ان کا دورِ حکومت شاہی سرپرستی میں فنونِ لطیفہ کی ترقّی کے حوالے سے بھی یادگار اور مثالی سمجھا جاتا ہے۔

نام وَر اور معتبر مؤرخین اپنی کتب میں‌ لکھتے ہیں‌ کہ عبّاسی خلیفہ ہارون الّرشید نے اپنے دور میں تہذیب کے ابدی نظریے کو زندہ رکھنے میں اہم کردار ادا کیا۔

حال ہی میں اس نام وَر اور مشہور عبّاسی خلیفہ کے دور کا ایک سکّہ دریافت کیا گیا ہے جس کے بارے میں حائل یونیورسٹی کے ماہرین نے بتایا ہے کہ یہ خلیفہ ہارون الّرشید کے زمانے کا طلائی سکّہ ہے اور 12 سو سال پرانا ہے۔

ماہرین کو یہ طلائی سکّہ فید کے تاریخی شہر میں کھدائی کے دوران ملا ہے جس پر 180 ہجری کی تاریخ درج ہے۔ ماہرین کے مطابق سکّے کا وزن 4 گرام ہے جس کی موجودہ مالیت ایک ہزار سعودی ریال کے برابر ہے۔

عباسی دور کے اس سکّے کے ایک رُخ پر ’لا الہ الا اللہ وحدہ لا شریک لہ‘ تحریر ہے جب کہ اس کے کناروں پر گولائی میں قرآن مجید کی آیت درج ہے۔

واضح رہے کہ مشہور خلیفہ ہارون رشید کا دورِ حکومت 786ء سے 809ء تک رہا جس میں عوام کو بھی خوش حال اور مالی طور پر آسودہ بتایا جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں