ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ منظرعام پر لائی جائے، جسٹس (ر) جاوید اقبال -
The news is by your side.

Advertisement

ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ منظرعام پر لائی جائے، جسٹس (ر) جاوید اقبال

اسلام آباد : لاپتہ افراد کمیشن کے سربراہ جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ منظر عام پر لانے کا مطالبہ کردیا۔ چیئرمین کمیشن نے کہا ہے کہ اسامہ بن لادن ایبٹ آباد میں تھا یا نہیں اگر بتا دیا تو پیچھے کیا رہ جائےگا، چند ماہ میں لاپتہ افراد کامعاملہ بھی حل ہوجائے گا۔

یہ بات انہوں نے سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہی، انہوں نے کہا کہ ایبٹ آباد کمیشن کی رپورٹ منظرعام پر لانا حکومت کی ذمہ داری ہے، کسی کوبری الذمہ قرارنہیں دیا۔

سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں ان کا کہنا تھا آج تک ایبٹ آباد کمشن کی سفارشات پر عمل نہیں ہوا۔ کمیشن کی رپورٹ کسی الماری میں پڑی ہو گی اسے منظر عام پر لایا جائے۔

مزید پڑھیں: امریکی آپریشن میں ’اسامہ بن لادن‘ کی ہلاکت کو پانچ برس بیت گئے

اسامہ بن لادن ایبٹ آباد میں تھا یا نہیں ،بتا دیا توپیچھے کیا رہ جائے گا؟ لا پتہ افراد کمیشن کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ دنیا کے دیگر ملکوں میں بھی لاپتہ افراد کی حالت ایسی ہی ہے جیسے پاکستان کی۔

کمیشن نے چھ ماہ کام کیا اور اگر سفارشات پر عمل ہوتا تو آج حالات مختلف ہوتے۔ ان کا کہنا تھا کہ چند ماہ میں لاپتہ افراد کامعاملہ حل ہوجائےگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں