site
stats
پاکستان

ایبٹ آباد : زندہ جلائی جانے والی لڑکی کی شناخت ہوگئی

ایبٹ آباد : گزشتہ روز ایبٹ آباد میں زندہ جلائی جانےوالی لڑکی نویں جماعت کی طالبہ نکلی، سولہ سال کی عنبرین آدھی رات کےبعد غائب ہوئی تھی۔

تفصیلات کے مطابق ایبٹ آباد کے علاقے مکول میں گاڑی میں زندہ جلائی جانے والی لڑکی کی شنا خت ہوگئی۔ عنبرین دختر ریاست علی نویں جماعت میں پڑھتی تھی۔

پولیس افسرنےبتایا کہ سولہ سالہ عنبرین آدھی رات کے بعد گھر سے غائب ہوئی تھی، عنبرین کو نامعلوم افراد نے گاڑی میں باندھ کرآگ لگادی تھی۔

ملزمان نے اپنا جرم چھپانے اور تفتیش کا رخ موڑنے کیلئے قریب کھڑی دواورگاڑیوں کو بھی آگ لگادی تھی،ابتدائی طورپرمتوفیہ کی چوڑیوں کی مدد سے انداز ہ لگایا گیا تھا کہ یہ لاش لڑکی کی ہے۔

پولیس نے سوزوکی ڈرائیور نصیر کو گرفتار کرلیا ہے جس نے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ اپنی گاڑی کھڑی کرکے گیا اور جب صبح دیکھا تو گاڑی جلی ہوئی تھی، اسے نہیں معلوم کہ لڑکی گاڑی میں کیسے آئی۔

پولیس نے نامعلوم افراد کیخلاف مقدمہ درج کرلیا۔ عنبرین کے گھروالوں نےابھی تک کسی پرشبہ ظاہرنہیں کیا ہے،پولیس نےواردات کے شبے میں چند افراد کوحراست میں بھی لے لیاہے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top