مشرف کوعلاج کیلئے بیرون ملک نہیں بھیجنا چاہیئے تھا، افتخارچوہدری -
The news is by your side.

Advertisement

مشرف کوعلاج کیلئے بیرون ملک نہیں بھیجنا چاہیئے تھا، افتخارچوہدری

ایبٹ آباد : سپریم کورٹ کے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت نے پرویزمشرف کو بیرون ملک علاج کیلئے بھیج کر اختیارات کا غلط استعمال کیا اوراب حکومت سپریم کورٹ کے کند ھے پر رکھ رہی ہے۔

سپریم کورٹ نے مشرف کو بیرون ملک بھیجنے کا کوئی فیصلہ نہیں دیا۔ یہ بات انہوں نے ایبٹ آباد میں سردار امان ایڈووکیٹ کے بھائی کی فاتحہ خوانی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

افتخارمحمد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان میں بھی پرویز مشرف کا علاج ہو سکتا تھا حکومت کو انہیں باہر نہیں بھیجنا چاہئیے تھا۔

ایک صحافی نے ان سے سوال کیا کہ پرویز مشرف اگر پاکستان نہ آئے تو مقدمات کا کیا بنے گا تو ان کا کہنا تھا کہ ماضی میں بھی عدالتوں نے انٹرپول کے ذریعے ایسے افراد کو پاکستان بلایا اور اب بھی واپس لا سکتی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں