The news is by your side.

Advertisement

افغان نائب وزیر اعظم ملا برادر کی عالمی برادری سے مدد کی اپیل

کابل: افغانستان کے نائب وزیر اعظم ملا برادر نے عالمی برادری سے مدد کی اپیل کر دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق افغان نائب وزیر اعظم ملا عبدالغنی برادر نے عالمی برادری سے افغان عوام کی مدد کی اپیل کی ہے، انھوں نے سیاسی تعصب کے بغیر ہنگامی انسانی امداد کا مطالبہ کیا۔

طالبان کے نائب وزیر اعظم نے عالمی برادری کے لیے ایک ویڈیو پیغام جاری کیا، جس میں انھوں نے کہا افغانستان کو ایک بڑے انسانی بحران کا سامنا ہے، افغان عوام کے پاس کھانا، رہائش، گرم کپڑے اور پیسے نہیں۔

ملا عبدالغنی برادر نے کہا دنیا کو بغیر کسی سیاسی تعصب کے افغان عوام کی حمایت کرنی ہوگی، عالمی برادری کو اپنی انسانی ذمہ داریوں کو پورا کرنا ہوگا۔

واضح رہے کہ پاکستان کی جانب سے مسلسل عالمی برادری سے افغانستان میں درپیش انسانی بحران کی طرف متوجہ ہونے کی اپیلیں کی جا رہی ہیں، اس سلسلے میں او آئی سی اجلاس کی اسلام آباد میں میزبانی بھی کی گئی، جو افغانستا ن میں بگڑتی ہوئی انسانی صورت حال کے تناظر میں منعقد کیا گیا تھا۔

جاپان کی جانب سے گزشتہ ماہ 10 کروڑ ڈالر کی امداد کا اعلان کیا گیا تھا، اس سے قبل جاپان نے افغانستان کو 5 کروڑ 80 لاکھ ڈالر پر مشتمل ہنگامی عطیہ جاری کیا تھا۔

افغانستان میں غذائی قلت، کروڑوں افراد اموات کا خدشہ

واضح رہے کہ پاکستان سمیت کئی ممالک اس مشکل وقت میں افغانستان کی امداد کر چکے ہیں، ‏وزیر اعظم عمران خان نے انسانی بنیاد پر افغانستان کے لیے پانچ ارب روپے امداد کی منظوری دی تھی، روس کی جانب سے بھی انسانی امداد پر مشتمل سامان کی پہلی کھیپ کابل پہنچ چکی ہے۔ سعودی عرب کی جانب سے ایک ارب ریال امداد کا اعلان کیا جا چکا ہے۔

برطانیہ کی ڈیزاسٹر ایمرجنسی کمیٹی کے مطابق افغانستان میں غذائی قلت کے باعث کروڑوں افراد کے اموات کا خدشہ ہے، رواں برس کے پہلے تین ماہ میں 10 لاکھ بچے غذائی قلت سے مرنے کے خطرے سے دوچار ہیں اور 22 ملین سے زیادہ بھوک کے خطرے کا شکار ہو جائیں گے۔

اقوام متحدہ نے افغانستان میں بینکاری اور مالیاتی نظام پر رپورٹ جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ افغانستان میں مالیاتی نظام کی تباہی کے معاشی اور سماجی اثرات خطرناک ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں