The news is by your side.

Advertisement

ممتاز قانون دان اور آئینی ماہرعبدالحفیظ پیرزادہ لندن میں انتقال کرگئے

لندن : ممتاز قانون دان اور آئینی ماہرعبدالحفیظ پیرزادہ لندن میں پچھترسال کی عمرمیں انتقال کرگئے، انہوں نے انیس سو تہتر کےآئین کی تیاری میں اہم کردار ادا کیا۔

معروف قانون دان عبدالحفیظ پیرزادہ نے انیس اکتالیس میں سندھ کے معروف سیاسی خاندان میں آنکھ کھولی، والد پیرزادہ عبدالستار سندھ کے وزیراعلی بھی رہے، عبدالحفیظ پیرزادہ نے کراچی یونیورسٹی سے گریجویشن کے بعد ایل ایل بی کی ڈگری حاصل کی، انہوں نے سندھ یونی ورسٹی سے ایل ایل ایم کیا، وکالت کا آغاز سندھ ہائی کورٹ سے کیا ۔

عبدالحفیظ پیرزادہ کا شمار پیپلزپارٹی کے بانی اراکین میں سے تھا، جنہوں نے تیس نومبر انیس سو سڑسٹھ میں ذوالفقار علی بھٹو کے ساتھ پیپلزپارٹی کی بنیاد رکھی، وہ ذوالفقار علی بھٹوکے قریبی ساتھی اور قانونی مشیر رہے اور کئی وزارتوں کا قلم دان سنبھالا، انیس سو تہتر کے آئین تشکیل دینے والی کمیٹی کے ممبر بھی رہے۔

انیس سو ستتر میں عبدالحفیظ پیرزادہ پیپلزپارٹی کے ان تین اہم اراکین میں شامل تھے، جنہوں نے اپوزیشن جماعتوں سے مذاکرات کیے، وہ وزارتِ خزانہ کے منصب پر فائز تھے، جب جنرل ضیاالحق نے پیپلزپارٹی کی حکومت ختم کرکےاقتدار سنبھالا۔

عبدالحفیظ پیرزادہ نے کئی تاریخی مقدمات کی عدالتوں میں پیروی کی ، جن میں ذوالفقار علی بھٹوکیس سرفہرست ہے، انہوں نے پرویز مشرف کیس ، اصغر خان کیس اور انتخابی دھاندلی کے مقدمے کی بھی اعلیٰ عدالتوں میں پیروی کی، انہوں نے ملک میں جمہوریت اور آمریت کے ادوار کو قریب سے دیکھا اور اقتدار کی غلام گردشوں میں جاری کھیل کے عینی شاہد تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں