ٹریفک سارجنٹ کو کچلنے والا رکن اسمبلی ایک اور مقدمے میں اشتہاری -
The news is by your side.

Advertisement

ٹریفک سارجنٹ کو کچلنے والا رکن اسمبلی ایک اور مقدمے میں اشتہاری

کوئٹہ: صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ٹریفک سارجنٹ کی ہلاکت اور اغوا کے مقدمے میں اشتہاری ملزم رکن صوبائی اسمبلی عبدالمجید اچکزئی کا مزید 7 دن کا ریمانڈ دے دیا۔

چند دن قبل ٹریفک سارجنٹ کی ہلاکت میں ملوث رکن صوبائی اسمبلی مجید خان اچکزئی اشتہاری نکلے۔

مجید اچکزئی کو آج کوئٹہ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں پولیس نے سنہ 2009 میں سیٹلائٹ ٹاؤن اغوا کے مقدمے کا چالان بھی عدالت میں پیش کردیا جس میں مجید خان اچکزئی اغوا اشتہاری تھے۔

عدالت نے دونوں مقدمات کی سماعت کرتے ہوئے ملزم کو 7 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

مجید اچکزئی کی پیشی کے دوران عدالت کےاطراف میں سخت سیکیورٹی تعینات کی گئی۔ مقدمہ کی مزید سماعت چھ جولائی تک ملتوی کردی گئی ہے۔

یاد رہے کہ عبدالمجید اچکزئی نے چند روز قبل اپنی گاڑی سے سڑک پر کھڑے ٹریفک وارڈن کو کچل دیا تھا۔ سی سی ٹی وی فوٹیجز سامنے آنے کے بعد ایم پی اے کی گرفتاری عمل میں آئی اور چیف جسٹس آف پاکستان سپریم کورٹ نے بھی اس واقعہ کا از خود نوٹس لیا تھا۔

مزید پڑھیں: ٹریفک سارجنٹ کے اہل خانہ اور رکن اسمبلی کے درمیان صلح

گزشتہ روز ملزم اور مقتول کے ورثا میں صلح کی خبریں سامنے آئیں تاہم ٹریفک سارجنٹ کے بھائی نے اس کی تردید کرتے کہا کہ شہید بھائی کے خون کا سودا نہیں کریں گے۔

عبدالمجید اچکزئی پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے رکن ہیں اور وہ حلقہ پی بی 13 سے بلوچستان اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے تھے۔


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں