نوازشریف کے خلاف ریفرنسز کا ٹرائل مکمل کرنے کے لیے مزید وقت دیا جائے، سپریم کورٹ کو خط
The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف کے خلاف ریفرنسز کا ٹرائل مکمل کرنے کے لیے مزید وقت دیا جائے، سپریم کورٹ کو خط

اسلام آباد : احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف نیب ریفرنسز نمٹانے کے لیے ٹرائل کورٹ کی مدت میں توسیع  کےلئے عدالت سے رجوع کرلیا، سپریم کورٹ کی طرف سے دی گئی ڈیڈ لائن کل ختم ہورہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز کے ٹرائل کی مدت میں توسیع  کے لیے احتساب عدالت کے جج ارشدملک نے رجسٹرارسپریم کورٹ کو خط لکھ دیا۔

خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ کی دی گئی ڈیڈلائن میں ٹرائل مکمل کرنا ممکن نہیں، العزیزیہ اورفلیگ شپ ریفرنسزمیں ٹرائل مکمل ہونے کے قریب ہے۔

خط میں استدعا کی گئی ہے کہ ٹرائل مکمل کرنےکےلئےمزیدوقت دیاجائے، العزیزیہ میں ملزم کابیان ،فلیگ شپ میں آخری گواہ پرجرح جاری ہے۔

خیال رہے سپریم کورٹ کی طرف سےدی گئی ڈیڈ لائن کل ختم ہورہی ہے۔

مزید پڑھیں : نواز شریف کے خلاف کرپشن ریفرنسز نمٹانے کی ڈیڈ لائن ختم ہونے میں صرف 4روز باقی

یاد رہے سپریم کورٹ نے نواز شریف کے خلاف العزیز یہ اور فلیگ شپ ریفرنس نمٹانے کے لئےاحتساب عدالت کو سترہ نومبر تک کی مزید مہلت دی تھی، چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا کہ اس کے بعد کوئی توسیع نہیں دی جائے گی سترہ نومبر تک کیسوں کا فیصلہ نہ ہوا تو عدالت اتوار کو بھی لگے گی۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیے تھے یہ وہ کیس ہے جس نے دو بھائیوں میں تلخی پیدا کی، خواجہ حارث نے کہا کہ ایک بار تو میری بات بھی مان لیں، جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ ہمیشہ آپکی بات مانی لیکن یہی تاثر دیا گیا کہ ہم نے آپ کی بات نہیں مانی۔

واضح رہے کہ نواز شریف کے خلاف العزیز یہ اور فلیگ شپ ریفرنس زیر سماعت ہے اور سپریم کورٹ کی جانب سے دی جانے والی ریفرنسز کا ٹرائل مکمل کرنے کی مہلت پانچویں بار ختم ہوگئی، جس کے بعد احتساب عدالت نے مزید مہلت کیلئے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا۔

اس سے قبل سپریم کورٹ ریفرنسز مکمل کرنے کے لیے پہلے ہی 4 بار مہلت میں توسیع کرچکی ہے، گزشتہ ماہ عدالتِ عظمیٰ نے نے 26 اگست تک ٹرائل مکمل کرنے کے لیے احتساب عدالت کو 6 ہفتوں کا وقت دیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں