The news is by your side.

Advertisement

شریف خاندان کےخلاف فلیگ شپ ضمنی ریفرنس کی سماعت 7مارچ تک ملتوی

اسلام آباد : نا اہل وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے فلیگ شپ ریفرنس میں استغاثہ کے گواہ عبدالحنان پر جرح مکمل کرلی جس کے بعد ضمنی ریفرنس کی سماعت 7 مارچ تک ملتوی ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں شریف خاندان کے خلاف نیب کے ضمنی ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی۔

نا اہل سابق وزیراعظم نوازشریف احتساب عدالت کے سامنے پیش ہوئے، اس موقع پرنوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے عدالت سے استدعا کی کہ ان کے موکل کی طبعیت خراب ہے اگرعدالت اجازت دے تو وہ چلے جائیں۔

خواجہ حارث کی درخواست پراحتساب عدالت نے نا اہل سابق وزیراعظم نوازشریف کو حاضری لگا کر عدالت سے جانے کی اجازت دے دی۔ نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے گواہ عبدالحنان پر جرح مکمل کرلی۔

گواہ عبدالحنان نے کہا کہ دستاویزات پرفارن اینڈ کامن ویلتھ تصدیق کنندہ کو ذاتی طورپرنہیں جانتا، آف شور کمپنیزکی دستاویزات فراہم کرنے والے افسرکو بھی نہیں جانتا۔ انہوں نے کہا کہ فارن اینڈ کامن ویلتھ آفس سے نوٹرائزیشن کے بعد دستاویزات کی تصدیق کی۔

استغاثہ کے گواہ نے بتایا کہ نائنتھ آرڈرآف کنفرمیشن نہ عدالتی ریکارڈ پرموجود ہے نہ نوٹری پبلک کوبھجوایا، نوٹری پبلک سے آنے والی دستاویزات کی کنفرمیشن آرڈرکا سوال نہیں اٹھایا۔

عبدالحنان نے کہا کہ دستاویزات کی نوٹری تصدیق کرنے والوں کے نام اور تاریخ درج ہی نہیں ہے، دستاویزات براہ راست وصول نہیں کی، کسی کمپنی افسریا لینڈرجسٹری کے افسرنے دستاویزات کی تصدیق نہیں کی۔ خواجہ حارث نے کہا کہ کسی سم کا سرٹیفکیٹ دستاویزات کے درست ہونے سے متعلق نہیں ہے۔

استغاثہ کے گواہ عبد الحنان پرنوازشریف کے وکیل خواجہ حارث کی جرح مکمل ہونے کے بعد احتساب عدالت نے شریف خاندان کے نیب کے ضمنی ریفرنس کی سماعت 7 مارچ تک ملتوی کردی۔


جتنے فیصلے دو گےعوام اتنا ہی ہمارا ساتھ دیں گے‘ نوازشریف


خیال رہے کہ اس سے قبل احتساب عدالت میں مختصر پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف کا کہنا تھا کہ کیا ہمارانشان چھیننے سے آپ ہمارا نشان مٹائیں دیں گے؟۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ جتنےفیصلے دو گےعوام اتنا ہی ہمارا ساتھ دیں گے، جتنے فیصلے دو گےعوام اتنا ہی ہمارا ساتھ دیں گے، عوام اب یہ سکھا شاہی برداشت کرنے کو نہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ سماعت پر استغاثہ کے گواہ عبدالحنان کا بیان قلمبند کیا گیا تھا اور ان کی جانب سے پیش کردہ دستاویزات کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنایا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں