The news is by your side.

Advertisement

بچی سے زیادتی و قتل کے ملزم کو سزائے موت

پنجاب میں 10 سالہ بچی کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والے ملزم کو سزائے موت سنا دی گئی۔

جھنگ کی عدالت نے دس سالہ بچی سے زیادتی و قتل کیس کا فیصلہ ایک سال بعدسنا دیا۔ فیصلہ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج خضر حیات نے سنایا۔

مجرم آصف کو جرم ثابت ہونےپر4سزائیں سنائیں گئیں۔مجرم کوبچی کوقتل کرنےپرسزائے موت کی سزاسنائی گئی۔
ایڈیشنل ڈسٹرکٹ سیشن جج نے مجرم کو بچی کو اغوا کرنے پر عمرقید کی سزا کا حکم دیتے ہوئے بچی سے زیادتی کرنے پر10 سال قید اور دو لاکھ روپےجرمانہ کیا ہے۔

کمسن حذیفہ کا زیادتی کے بعد قتل،

ملزم کو سزائے موت

عدالت نےمجرم کو5لاکھ روپےبچی کےورثاکو ادائیگی کابھی حکم دیا ہے۔ مجرم نے 19نومبر 2019 کو دس سالہ بچی کو زیادتی کے بعد قتل کیاتھا۔

21نومبر 2020 کو پنجاب کے شہر اٹک کی عدالت نے کمسن طالبعلم کو زیادتی کے بعد قتل کرنے والے ملزم کو سزائے موت سنائی تھی۔

جنسی زیادتی قانون: مجرم کو نامرد

کر کے رہا کرنے کی تجویز

عدالت نے ملزم عبدالحئی کو7 سال قید بامشقت، عمر قید اور سزائے موت سنائی۔ملزم عبدالحئی نےگزشتہ سال 6 سالہ حذیفہ کو زیادتی کے بعدقتل کر دیا تھا۔ملزم کےخلاف مختلف دفعات کے تحت تھانہ فتح جنگ میں مقدمات درج تھے۔

معصوم طالبعلم کے سفاکانہ قتل کے خلاف فتح جنگ میں شدید احتجاج کیا گیا اور ملزم کو سزائے موت دینے کا مطالبہ کیا گیا۔اسکول کے بچوں نے بھی ساتھی طالبعلم کے قتل پر احتجاجی ریلی نکالی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں