The news is by your side.

Advertisement

لاہورمیں لڑکی تیزاب گردی کا نشانہ بن گئی

لاہور: لاہور میں تحفظِ نسواں بل بھی معصوم لڑکیوں کو تیزاب گردی کا نشانہ بننے سے نا بچا سکا،نامعلوم افراد نے گھر میں زبرداستی داخل ہوکر چہرے پرتیزاب پھینک دیا۔

تفصیلات کے مطابق رات گئے لاہور کے علاقے ہربنس پورہ میں 22 سالہ لڑکی کو گھر میں زبردستی داخل ہوکرتیزاب گردی کا نشانہ بنایا گیا۔

تیزاب گردی کا نشانہ بننے والی لڑکی کو تشویشناک حالت میں لاہور کے سروسز اسپتال منتقل کیا جہاں اسے طبی امداد فراہم کی جارہی ہے، ڈٓاکٹروں کے مطابق لڑکی کی حالت تشویش ناک ہے۔

لڑکی کی شناخت مخفی رکھی گئی ہے جبکہ لڑکی کو بربریت کا نشانہ بنانے والوں کی شناخت بھی تاحال منظرِعام پر نہیں آسکی۔

واضح رہے کہ پاکستان میں ہرسال سینکڑوں لڑکیاں تیزاب گردی کا نشانہ بن جاتی ہیں اورعموماً معاشرہ انہیں انصاف فراہم کرنے میں ناکام رہتاہے۔

چاردن قبل پنجاب اسمبلی نے خواتین پر گھریلو تشدد کی روک تھام کے لئے تحفظِ نسواں بل منظور کیا ہے جس میں خواتین کو تشدد سے بچانے کے لئے اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔

سماجی حلقوں نے بل کو خوش آمدید کہا ہے اوراسےخواتین کو تحفظ فراہم کرنے کی جانب مثبت قدم قراردیا ہے تاہم مذہبی حلقوں میں بل کی مخالفت کی جارہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں