The news is by your side.

بھتہ خوری اور منی لانڈرنگ کیس میں نورا فتیحی سے 7 گھنٹے پوچھ گچھ

ممبئی: پولیس نے معروف بالی وڈ اداکارہ نورا فتیحی سے ملزم سکیش چندرا شیکھر کے خلاف بھتہ خوری اور منی لانڈرنگ کیس میں 7 گھنٹے تفتیش کی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق دہلی پولیس سکیش چندرا شیکھر کے خلاف 200 کروڑ روپے بھٹہ خوری اور منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات کر رہی ہے۔ نورا فتیحی اور جیکلین فرنانڈز کو ملزم کے قریبی دوست ہونے کی بنا پر شاملِ تفتیش کیا گیا ہے۔

دہلی پولیس کرائم ونگ کے اسپیشل کمشنر نے بتایا: ’ملزم سکیش نے کئی بالی وڈ اداکاراؤں کو مہنگے تحائف دیے ہیں جن کی تحقیقات کر رہے ہیں، نورا فتیحی کو اسی بنا پر پوچھ گچھ کے لیے طلب کیا گیا۔ وہ شریکِ جرم ہیں یا عینی شاہد، اس بات کا تعین انکوائری مکمل ہونے کے بعد کیا جائے گا‘۔

مزید پڑھیں: جیکلین نے سکیش سے کیا کچھ حاصل کیا؟ تہلکہ خیز چارج شیٹ سامنے آگئی

انہوں نے بتایا کہ ملزم سے تفتیش کے دوران مزید دو سے تین اداکاراؤں کا نام سامنے آیا ہے جنہیں تفتیش کے لیے کسی بھی وقت طلب کیا جا سکتا ہے۔

تفتیش میں نورا فتیحی نے کیا بتایا؟

نورا فتیحی نے 12 دسمبر 2020 سے پہلے ملزم سے کسی بھی قسم کا رابطہ رکھنے کی ترید کی جبکہ ملزم کے مطابق وہ اُس وقت اس سے رابطے میں تھی۔ اداکارہ نے ملزم کی جانب سے بی ایم ڈبلیو کار کا تحفہ قبول کرنے کی حامی بھری اور بعد میں لینے سے انکار کر دیا تھا۔

اداکارہ نے پولیس کو بتایا کہ میں نے بوبی خان سے کہا کہ سکیش سے گاڑی لے لو کیوں کہ یہ اچھا موقع ہے، لیکن سکیش نے بوبی کو گاڑی دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ نورا کے علاوہ کسی کو گاڑی نہیں دوں گا۔

بوبی خان نورا فتیحی کا قریبی دوست ہے۔

پولیس نے جب ان سے ملزم کے ساتھ مہنگے تحائف کی لین دین سے متعلق دریافت کیا تو انہوں نے صاف انکار کر دیا اور کہا کہ ایسا کبھی نہیں ہوا۔

جبکہ ملزم پولیس بتا چکا ہے کہ اس نے نورا فتیحی کو چار مہنگے ہینڈ بیگ پیسوں سمیت بطور تحفہ دیے اور اداکارہ نے خود بیگ کو ممبئی مال میں پسند کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں