The news is by your side.

Advertisement

امریکی اداکارہ کو امتحان میں رشوت دینے پر جیل ہوگئی

نیویارک: امتحان میں زیادہ نمبروں کے لیے رشوت دینے کا جرم ثابت ہونے پر امریکی اداکارہ کو 14 روز کی قید کی سزا سنادی گئی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی اداکارہ فلسٹی نے اپنی بیٹی کو زیادہ نمبر دلوانے کے لیے 15 ہزار ڈالر رشوت دی تھی، انہیں 14 روز قید کی سزا سنائی گئی ہے اور 30 ہزار جرمانہ ادا کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔

فلسٹی اپنی بیٹی کو کسی اچھے کالج میں داخل کرانا چاہتی تھیں مگر اچھے کالجوں کا میرٹ بہت اونچا ہوتا ہے اور وہاں صرف انہی امیدواروں کو داخلہ ملتا ہے جنہوں نے ایس اے ٹی میں زیادہ نمبر لیے ہوں۔

امریکی 56 سالہ اداکارہ ان 34 والدین میں سے پہلی ہیں جنہیں اس سلسلے میں سزا ہوئی ہے، انہین 30 ہزار ڈالر کا جرمانہ بھی ادا کرنا پڑے گا اور نگرانی میں 250 گھنٹوں کے لیے سماجی خدمات کے کام بھی کرنا ہوں گے۔

اسکینڈل میں امریکا کی معروف ترین یونیورسٹیوں کے نام سامنے آئے ہیں

سزا ہونے سے پہلے ہافمین نے بتایا کہ ان کی بیٹی نے ان سے پوچھا تھا کہ وہ اس پر اعتماد کیوں نہیں کرتیں، فلسٹی ہافمین کا کہنا تھا کہ وہ اپنی بچی سے صرف یہ ہی کہہ سکیں کہ انہیں بہت افسوس ہے، ان کا کہنا تھا کہ وہ بے وقوف تھیں اور انہوں نے غلطی کی اور یہ کہ وہ اپنے اس اقدام پر شرمندہ ہیں۔

ایس اے ٹی میں نمبر بڑھوانے کے اسکینڈل میں 51 لوگوں کے نام آئے تھے جن پر مقدمے چلائے گئے۔

امریکی تاریخ میں محکمہ انصاف کی جانب سے یہ پہلا ایسا مقدمہ ہے جس میں والدین پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انہوں نے رشوت دے کر اپنے بچوں کا داخلہ کرایا تھا۔

اس اسکینڈل میں امریکا کی معروف ترین یونیورسٹیوں کے نام سامنے آئے جن میں ہیل، اسٹین فورڈ، جارج ٹاؤن اور یو سی ایل اے شامل ہین، اس اسکینڈل سے انکشاف ہوا کہ والدین اپنے بچوں کے اچھے کالجوں اور یونیورسٹیوں میں داخلے کے لیے کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں۔

اس اسکینڈل سے ان خدشات کو بھی تقویت ملی ہے کہ کالجوں میں داخلے کا نظام خراب ہے جو امیروں کے حق میں جاتا ہے۔

اس مقدمے کے فیصلے کو اس نظر سے بھی دیکھا جارہا ہے کہ دیگر ملزمان کے ساتھ کیا سلوک ہوگا، آئندہ ماہ کے دوران تقریباً درجن بھر مزید والدین کو سزا سنائی جائے گی، 15 کے قریب والدین نے اپنے جرم کا اعتراف کیا ہے جبکہ 19 مقدمہ لڑ رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں