The news is by your side.

Advertisement

کراچی، وکیل کا رینجرز اہلکاروں پر حملہ، ملزم گرفتار، اسلحہ برآمد

کراچی: شاہ لطیف کے علاقے میں وکیل نے رینجرز اہلکاروں پر حملہ کردیا، رینجرز نے مبینہ مقابلے کے بعد دہشت گرد وکیل کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق شاہ لطیف کے علاقے میں رینجرز پر حملہ کرنے والے وکیل کے خلاف رینجرز افسر کی مدعیت میں دو مقدمات درج کرلیے گئے، مقدمے میں دہشت گردی، مقابلے، جان سے مارنے کی کوشش پر درج کیا گیا، ایک اور مقدمہ غیرقانونی ہتھیار رکھنے کی دفعات کے تحت بھی درج کیے گئے۔

ایف آئی آر کے متن کے مطابق رینجرز اہلکاروں پر حملے کا واقعہ گزشتہ روز ملیر در محمد گوٹھ میں پیش آیا تھا، اہلکار نے بیان میں بتایا کہ دوران گشت در محمد گوٹھ میں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع ملی تھی۔

میگافون پر اعلان کیا کہ ہم رینجرز اہلکار ہیں ہم پر فائرنگ نہ کریں

رینجرز اہلکار

رینجرز نے مکان کی تلاشی کے لیے مکان کو چاروں جانب سے گھیرا، اچانک سے اندر سے مجھ پر فائر ہوا میں نے میگافون پر اعلان کیا کہ ہم رینجرز اہلکار ہیں ہم پر فائرنگ نہ کریں۔

اہلکار کے مطابق میگا فون پر اعلان سنتے ہی ہمیں مارنے کی نیت سے مزید فائرنگ شروع کردی گئی، دہشت گردوں کی جانب سے چلائی گولی اہلکا صدف عباس کے ہاتھ میں پکڑی سرچ لائٹ پر لگی، حفظ ماتقدم کے طور پر جوابی فائرنگ کرتے ہوئے مکان کے اندر داخل ہوئے اور ملزم کو رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا۔

ترجمان رینجرز کے مطابق مقابلے کے دوران 2 دہشت گرد فائرنگ کرتے ہوئے فرار ہوگئے، گرفتار دہشت گرد نے اپنا نام مظہر جونیجو بتایا، ملزم کے قبضے سے اسلحہ، وکیل کا کارڈ، شناختی کارڈ اور موبائل فون ملا۔

رینجرز کا کہنا ہے کہ کمرے کے اندر سے چار عدد پستول سے چلائے گئے خول بھی ملے، گرفتار دہشت گرد کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں