The news is by your side.

Advertisement

افغانستان سے آنے والے جرائم پیشہ عناصر کراچی میں پھر متحرک

کراچی: افغانستان سے آنے والے جرائم پیشہ عناصر کراچی میں پھر سے تحرک ہوگئے ہیں، انتہائی مطلوب گروہ کے چار کارندے گرفتار کرلیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق اینٹی کار لفٹنگ سیل نے سہراب گوٹھ میں خفیہ اطلاع پر کارروائی کی، ایس ایس پی کا کہنا تھا کہ 8 ارکان پر مشتمل گروہ کے چار کارندے پکڑے گئے ہیں۔

ایس ایس پی اے سی ایل سی اسد رضا نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گرفتار ملزمان میں ایک کا تعلق کراچی سے ہے جب کہ باقی تین افغانی ہیں۔

ملزمان سے افغان کرنسی، پاسپورٹ، اسلحہ اور دیگر سامان بھی برآمد کیا گیا ہے، ایس ایس پی نے کہا کہ ملزمان قیمتی پینل اور نیوی گیشن سسٹم چوری کرتے تھے، جب کہ پینل میں قیمتی سامان لاکھوں روپے میں فروخت ہوتا تھا۔

ایس ایس پی کا کہنا تھا کہ افغان ملزمان 4 سال سے کراچی میں وارداتیں کر رہے تھے، ڈیفنس میں 21 مئی کی رات کو 10 منٹ میں 6 کاروں کا صفایا کیا گیا تھا، اے آر وائی نیوز نے چوری کرتے ملزمان کی سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرلی تھی۔

ایس ایس پی اسد رضا کے مطابق جنوبی زون میں 4 ماہ کے اندر کاروں کا صفایا کرنے کے 54 مقدمات درج ہوئے ہیں، جب کہ ملزمان نے 4 سال میں 2500 وارداتیں کیں۔

کراچی کے شہری کل سے ایک اور ہیٹ ویو کے لیے تیار رہیں


اسد رضا کا کہنا تھا کہ کراچی میں مصری خان اورغنی نیٹ ورک چلاتے ہیں، اے سی ایل سی مرکزی ملزمان کی گرفتاری کے لیے کام کررہی ہے۔

انھوں میڈیا کو بتایا کہ ملزمان خود قیمتی کار میں شہر کے پوش علاقوں میں گھومتے تھے اور مہنگی کار دیکھ کر وہیں اپنی گاڑی پارک کرکے واردات کرتے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں