The news is by your side.

برطانیہ کے لیے کام کرنے والے افغان مترجمین کا ڈیٹا لیک

لندن: برطانیہ کے لیے کام کرنے والے افغان مترجمین کا ڈیٹا لیک ہو گیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے لیے کام کرنے والے سیکڑوں افغان مترجمین کا ڈیٹا لیک ہونے کا انکشاف ہوا ہے، جس سے افغانستان میں موجود ترجمانوں کی زندگیاں خطرے میں پڑ گئی ہیں۔

برطانوی میڈیا کے مطابق 250 سے زائد افغان ترجمانوں کی معلومات چوری ہو چکی ہیں، لیک ہونے والی معلومات میں افغان ترجمانوں کے ای میل ایڈریسز اور تصاویر شامل ہیں۔

برطانوی وزیر دفاع بین ویلیس کی ہدایت پر ان افغان ترجمانوں کے ڈیٹا لیک ہونے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں جنھوں نے طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد ملک چھوڑنے کے خواہاں برطانوی فوجیوں کے لیے کام کیا تھا۔

برطانوی نشریاتی ادارے کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزارت دفاع کی غلطی سے ڈھائی سو سے زائد ترجمانوں کے نام، ای میل پتے اور پروفائل تصاویر وزارت سے بھیجی جانے والی ایک ای میل میں کاپی ہو گئیں، یہ ای میل ان تمام ترجمانوں کو بھیجی گئی تھی جو افغانستان میں تاحال چھپے ہوئے ہیں۔

وزارت دفاع کی جانب سے اس غلطی پر معذرت کی گئی ہے، ذرائع کے مطابق ڈیٹا لیک ہونے سے ان ترجمانوں میں خوف و ہراس پھیلنے کا اندیشہ جنھوں نے برطانوی فوجیوں کے لیے کام کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں