افغان طالبان میں ایک نیا دھڑا تشکیل پاگیا، ملا منصور کی اطاعت قبول کرنے سے انکار -
The news is by your side.

Advertisement

افغان طالبان میں ایک نیا دھڑا تشکیل پاگیا، ملا منصور کی اطاعت قبول کرنے سے انکار

کابل: افغان طالبان سے علیحدگی اختیار کرنے والے ایک دھڑے نے اپنے علیحدہ امیرکا اعلان کردیا ہے، واضح رہے کہ ملا اختر منصور کے امیر منتخب ہونے کے بعد یہ پہلی تفریق ہے جس سے ممکنہ طور پر امن مذاکرات میں رخنہ پیدا ہوسکتا ہے۔

فرانسیسی خبررساں ادارے کے مطابق طالبان کے علیحدہ گروہ نے جنوب مغربی صوبے فرح میں باغی جنگجوؤں کا ایک اجلاس منعقد کیا جس میں ملا محمد رسول کو متفقہ طور پر امیر منتخب کرلیا گیا۔

فی الحال یہ کہنا قبل از وقت ہے کہ آیا یہ نیا گروہ وسیع پیمانے پر حمایت حاصل کرسکے گا یا نہیں تاہم ملا عمر کی ہلاکت کے اعلان کے بعد گروہ میں تفریق منظرعام پرآگئی ہے۔

ملا رسول نے جنگجوؤں کے مجمع میں اعلان کیا کہ ’’ ملا منصور ہمارے امیر المومنین نہیں ہیں، ان کا انتخاب شرعی طریقے سے نہیں ہوا لہذا ہم انہیں اپنا رہنما تسلیم نہیں کرتے‘‘۔

واضح رہے کہ ملا منصور کے مخا لفین میں طالبان کے سابق امیر ملا عمر کے اہل خانہ بھی شامل ہیں اور ملا عمر کے بیٹے اور بھائی نے بھی نئے امیر کی اطاعت قبول کرلی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں