افغان طالبان نے امریکی حکام سے مذاکرات کا نیا دور منسوخ کردیا، لائحہ عمل کاجلد اعلان متوقع
The news is by your side.

Advertisement

افغان طالبان نے امریکی حکام سے مذاکرات کا نیا دور منسوخ کردیا

کابل: افغان طالبان کی قیادت نے ایجنڈے پر اتفاق نہ ہونے پر امریکی حکام سے مذاکرات کا نیا دور منسوخ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق آج سے امریکی حکام اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات کا نیا دور شروع ہونا تھا تاہم افغان طالبان کی قیادت نے ایجنڈے پر اتفاق نہ ہونے پر مذاکرات سے انکار کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق طالبان اور امریکی حکام کے درمیان مذاکرات کا نیا دور آج سے قطر میں شروع ہونا تھا۔

افغان طالبان کا کہنا ہے مذاکرات فریقین کے اتفاق کے بعد منسوخ کیے گئے ہیں، چند پہلوؤں پر دونوں فریقین کے درمیان اختلافات ہیں۔

طالبان نے افغان حکام کی مذاکرات میں شمولیت کی عالمی طاقتوں کی درخواست کو بھی مسترد کیا، افغان طالبان اور زلمے خلیل زاد کے درمیان مذاکرات کے تین دور ہوچکے ہیں۔

طالبان سے مذاکرات کے بعد امریکا کے خصوصی مندوب افغانستان پہنچ گئے

طالبان نے گذشتہ روز مذاکرات کی تصدیق کر تے ہوئے کہا تھا کہ مذاکرات میں طالبان اور امریکا کے علاوہ کوئی دوسرا ملک شرکت نہیں کرے گا۔

یاد رہے کہ دسمبر میں متحدہ عرب امارات میں افغان امن مذاکرات میں طالبان اور امریکا کے ساتھ پاکستان ، سعودی عرب اور یو اے ای کے نمائندوں نے بھی شرکت کی تھی، جس میں افغانستان میں ممکنہ جنگ بندی اور غیر ملکی افواج کے انخلا کے بارے میں بات چیت کی گئی تھی۔

بعد ازاں طالبان کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا تھا کہ انہوں نے خصوصی امریکی مندوب زلمے خلیل زاد کے ساتھ ملاقات اور ابتدائی بات چیت کی ہے اور یہ کہ مذاکرات کا یہ سلسلہ جاری رہے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں