The news is by your side.

Advertisement

افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانا پہلا ہدف ہے، سرتاج عزیز

اسلام آباد : افغانستان میں مفاہمتی عمل سے متعلق چار ملکی کوارڈینیشن کمیٹی کا اجلاس اسلام آباد میں جاری ہے، سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانا پہلا ہدف ہے۔

افغان مفاہمتی عمل کے حوالے سےاسلام آباد میں ہونے والے اجلاس میں مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہمسایہ ممالک کو اہمیت دیتا ہے اور افغانستان میں پائیدار امن کا خواہاں ہے۔ واضح اہداف کا تعین امن کے قیام کے لیے بنیادی حیثیت رکھتا ہے، سیاسی مذاکرات کے ذریعے ہی افغانستان میں امن ممکن ہوگا۔

سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ آرمی چیف نے27دسمبر کو افغانستان کا دورہ کیا، چار فریقی ممالک کے اجلاس کا مقصد افغانستان میں قیام امن ہے، سیاسی مذاکرات کے ذریعے ہی افغانستان میں امن ممکن ہوگا۔

افغان نائب وزیر خارجہ حکمت کرزئی افغانستان کی نمائندگی کررہے ہیں، پاکستان اور افغانستان کیلئے امریکی نمائندہ خصوصی رچرڈ اولسن اورچین کے نمائندہ خصوصی بھی اجلاس میں شریک ہیں۔

افغان مفاہمتی عمل سے متعلق چارملکی اجلاس گزشتہ سال نو دسمبر کو اسلام آباد میں منعقدہ ہارٹ آف ایشیاء کانفرنس کے موقع پر ہوا تھا۔

ذرائع کے کہنا ہے کہ اجلاس میں طالبان رہنماؤں کی آمد متوقع ہے اور ان طالبان کی فہرست بھی پیش کی جائے گی جو خانہ جنگی بند کرنے کیلئے تیار ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں