The news is by your side.

Advertisement

افغان صوبے ہرات میں دھماکا، خواتین بچوں سمیت 34 افراد ہلاک، پاکستان کی مذمت

کابل/اسلام آباد: افغانستان کے صوبے ہرات میں ہائی وے پر بس میں دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 34 افراد ہلاک ہوگئے، پاکستان نے دھماکے کی مذمت کی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق بدھ کی صبح ہرات قندھار ہائی وے پر بس اپنی منزل کی جانب رواں دواں تھی کہ ہائی وے پر بم دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 34 افراد زندگی کی بازی ہار گئے جبکہ 17 زخمی ہوگئے، ترجمان دفتر خارجہ نے افغانستان میں بس دھماکے کی مذمت کی ہے۔

حادثے میں ہلاک و زخمیوں کو فوری طور پر مقامی اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں زخمیوں کی ہلاکت تشویش ناک بتائی جارہی ہے۔

سیکیورٹی فورسز نے علاقے میں گھیرے میں لے کر امدادی کارروائیوں کا آغاز کردیا ہے اور جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کیے جارہے ہیں۔

مزید پڑھیں: قندھار میں افغان فوجی کی فائرنگ، 2 امریکی فوجی ہلاک

بس حملے کی ذمہ داری کسی بھی تنطیم کی جانب سے قبول نہیں کی گئی ہے۔

افغانستان اور اتحادی فورسز کے ترجمان کا کہنا ہے کہ طالبان کی جانب سے ہرات اور قندھار ہائی وے پر بس نصب کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ افغانستان میں حملے ایسے وقت میں کیے جارہے ہیں جب وہاں آئندہ ماہ صدارتی انتخابات ہونے ہیں، چند روز قبل بھی نائب صدارتی امیدوار کے دفتر پر حملے میں 20 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز افغان فوجی کی فائرنگ سے تین امریکی فوجی ہلاک ہوگئے تھے جبکہ جوابی کارروائی میں حملہ آور افغان اہلکار کو ہلاک کردیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں