site
stats
پاکستان

آپریشن ضربِ عضب میں افغانستان نے تعاون نہیں کیا، ترجمان پاک فوج

واشنگٹن: پاک فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ آپریشن ضربِ عضب میں افغانستان نے پاکستان کے ساتھ تعاون نہیں کیا۔

واشنگٹن میں اے آروائی نیوز کے نمائندے سے بات چیت کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آرکا کہنا تھا کہ پاکستان نے افغانستان میں امن کے لئے ہمیشہ حمایت کی اورخلوص سے ہمسایہ ملک میں امن کے لئے کوششوں کی حمایت کرتے رہیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں قیام امن کے لئے منعقد ہونے والے مذاکرات میں پاکستان نے اپنا بھرپور کردار ادا کیا تاہم افغان حکومت میں موجود کچھ عناصر نے اس سارے عمل کو نادانستگی میں سبوتاژ کردیا۔

ان کا کہنا تھا کہ آپریشن ضرب عضب سے قبل ہی افغان حکومت کو آگاہ کردیا تھا کہ دہشت گرد آپریشن سے بچنے کے لئے افغانستان فرارہوں گے لیکن آپریشن ضرب عضب کی سپورٹ میں افغان حکومت نے اقدامات نہیں کئے۔

لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے یہ بھی کہا کہ دہشت گردوں کے فرار کا راستہ روکنے کے لئے سرحد پر سخت نگرانی کی ضرورت ہے اورانہیں روکنے کے لئے افغانستان کو بھی اقدامات کرنے چاہیئں۔

پاک فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ بدلتے عالمی حالات کے تناظر میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا دورہ امریکا انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دورے کے دوران آرمی چیف راحیل شریف امریکی سول اور فوجی قیادت سمیت وزیرخارجہ جان کیری سے بھی ملاقات کریں گے جب کہ 5 روزہ دورہ امریکی کے دوران علاقائی سیکیورٹی اور استحکام سمیت دوطرفہ تعلقات پر بھی بات چیت ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ آرمی چیف چیف اور امریکی عسکری حکام کے درمیان فوجی معاملات سمیت وسیع ایجنڈے پر بات ہوگی جب کہ بدلتے علاقائی حالات میں جنرل راحیل شریف کا دورہ امریکا انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔

آرمی چیف دورہ امریکہ کے بعد تین روز کیلئے برازیل جائیں گے جس کے بعد وہ ایک روز کیلئے ایوری کوسٹ جائیں گے جہاں وہ اقوام متحدہ کے امن مشن میں تعینات پاک فوج کے جوانوں سے ملقات کریں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top