وقار یونس کی پی سی بی کو جمع کرائی گئی رپورٹ مننظر عام پر آگئی -
The news is by your side.

Advertisement

وقار یونس کی پی سی بی کو جمع کرائی گئی رپورٹ مننظر عام پر آگئی

لاہور: وقاریونس نے کل قوم سے معافی مانگی اورآج سارا ملبہ آفریدی اورمعین خان پرڈال دیا،وقار یونس نے رپورٹ میں کہا تھا کہ معین خان من پسند کھلاڑیوں کو باہرلیجاتےتھے۔

ہاتھ جوڑ کرقوم سے معافی مانگنے والےقومی ٹیم کے ہیڈ کوچ نے سابق چیف سلیکٹرکے خلاف بلیم گیم شروع کردیا، وقاریونس نے پی سی بی کی تحقیقاتی کمیٹی کو رپورٹ پیش کی جس میں سابق چیف سلیکٹر معین خان کو بھی ٹیم کی تباہی کا ذمہ دار ٹھرایا، وقارنےالزام لگایا کہ معین خان من مانیاں کرتے تھے۔

وقار یونس کی رپورٹ کے مطابق معین خان کھلاڑیوں کو بغیر اجازت باہر لے جاتے تھے ،تحفے تحائف دلاتے تھے یہ سب وہ انہیں نیچا دکھانے کے لیے کرتے تھے۔

وقار یونس نے کہا کہ ماضی میں عمر اکمل کو شامل کرانے پر معین خان اور محمد اکرم نے ان کی مخالفت کی تھی، وقار یونس بورڈ پر بھی برس پڑے، انہوں نے کہا کہ دوہزار پندرہ ورلڈ کپ کے بعد دی گئی رپورٹ پر عمل درآمد نہیں ہوا۔ جس کے سبب ایشیا کپ اور ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں حوصلہ افزا نتائج حاصل نہیں ہوسکے۔

ذرائع کے مطابق وقار یونس نے رپورٹ میں کپتان شاہد آفریدی پر الزامات لگائے ہیں، کپتان شاہد آفریدی ورلڈ کپ میں سنجیدہ نہیں تھے، وہ ٹیم میٹنگز اور پریکٹس میں بھی شریک نہیں ہوتے تھے۔

قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ وقار یونس کی پی سی بی کو جمع کرائی گئی رپورٹ لیک ہوگئی، رپورٹ کے مندرجات سامنے آنے پر وقار برہم ہوگئے۔

واضح رہے کہ دوہزار پندرہ ورلڈ کپ میں معین خان چیف سلیکٹر اور وقار یونس ہیڈ کوچ تھے اس وقت ٹیم کوارٹرفائنل سے آگےنہ بڑھ سکی تھی، اسی دورے میں معین خان کا کسینوجانے کااسکینڈل بھی سامنےآیا تھا۔

وقار یونس کے الزامات پر معین خان نےسوشل میڈیا پرصرف اتنا کہا کہ ’ کہہ رہا ہے شور دریا سے سمندر کا سکوت، جس کا جتنا ظرف ہے اتنا ہی وہ خاموش ہے‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں