The news is by your side.

Advertisement

عدالتی حکم کے بعد سندھ بھر میں گٹکے ماوے کے خلاف کریک ڈاؤن

کراچی: عدالتی حکم پر سندھ بھر میں گٹکا اور ماوا کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر دیا گیا، آئی جی سندھ ڈاکٹر کلیم امام نے گٹکا ماوا فروخت کرنے والوں کے خلاف کارروائی کے احکامات جاری کر دیے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے گٹکا فروخت کرنے والوں پر دفعہ 337 جے کے تحت مقدمات درج کرنے کی ہدایت کے بعد سندھ بھر میں کریک ڈاؤن شروع ہو گیا ہے۔

سندھ بھر میں گٹکا ماوا کی فروخت میں ملوث 211 افراد کے خلاف مقدمات درج کر لیے گئے، ایسٹ زون میں 40، ساؤتھ میں 23، حیدر آباد میں 57 کیسز درج کیے گئے، جب کہ شہید بینظیر آباد میں 65 اور میر پور خاص میں 4 مقدمات درج کیے گئے۔

تمام مقدمات میں تعزیرات پاکستان کی دفعہ 337 جے شامل کی گئی ہے، ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد تمام کیسز نا قابل ضمانت ہوں گے اور 10 سال کی سزا ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  گٹکے کا استعمال ، کراچی میں منہ کے کینسر کی ہولناک شرح پر عدالت حیران

واضح رہے کہ سال بھر میں گٹکے اور ماوے کے خلاف اب تک 5208 مقدمات درج کیے جا چکے ہیں، مقدمات میں دفعہ J-337 کا اطلاق کر کے چالان عدالتوں میں جمع کرایا جا رہا ہے۔

گزشتہ روز سندھ ہائی کورٹ میں گٹکے کی فروخت پر پابندی سے متعلق توہین عدالت کی درخواست پر سماعت کے دوران جج یہ جان کر حیران رہ گئے کہ کراچی میں منہ کے کینسر کی شرح ہولناک ہے۔

انچارج کینسر وارڈ ڈاکٹر غلام حیدر نے عدالت کو بتایا کہ جناح اسپتال کی او پی ڈی میں 300 سے زائد مریض روز آتے ہیں، 70 فی صد مریض منہ کے کینسر کے آتے ہیں، مریضوں میں طلبہ اور فیکٹریوں میں کام کرنے والے نوجوان زیادہ ہوتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں