The news is by your side.

Advertisement

کوہستان ویڈیو اسکینڈل، افضل کوہستانی کی بیوی اغوا، مقدمہ درج

ایبٹ آباد: کوہستان ویڈیو اسکینڈل کے مرکزی مقتول کردار افضل کوہستانی کی اہلیہ کو اغوا کرلیا گیا جس کا پولیس نے مقدمہ درج کرلیا۔

پولیس حکام کے مطابق کوہستان اسکینڈل کے مرکزی کردار افضل کوہستانی کی بیوی کے اغوا کا مقدمہ نامعلوم افراد کے خلاف درج کرلیا گیا۔ حکام کے مطابق افضل کوہستانی کو چند ماہ قبل ایبٹ آباد میں فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز ایبٹ آباد کےعلاقےگامی اڈا کے قریب نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے افضل کوہستانی کو قتل کر دیا گیا تھا۔ مقتول سات سال قبل ایک ویڈیو سامنے لایا تھا جس میں کوہستان سے تعلق رکھنے والی لڑکیاں گانا گا رہی تھیں، بعد ازاں ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے پانچوں لڑکیوں کو قتل کردیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں: افضل کوہستانی قتل، پولیس نے بھانجے کو قاتل قرار دے دیا، ملزم گرفتار

افضل کوہستانی کی قتل ہونے سے قبل ریکارڈ کی گئی ایک ویڈیو سامنے بھی آئی جس میں انہوں نے پولیس کےغیر مناسب رویے اورقتل کرنےکی دھمکیوں سےمتعلق آگاہ کیا تھا۔

پولیس نے افضل کوہستانی قتل کیس میں بھانجے کو نامزد کر کے گرفتار کیا تھا جبکہ مقتول کے اہل خانہ نے پولیس کی جانب سے درج کی گئی ایف آر کو مسترد کرتے ہوئے فیض الرحمان کو بے گناہ قرار دے دیا۔

کوہستان ویڈیو اسکینڈل کے مرکزی کردار افضل کوہستانی کے قتل کا مقدمہ کینٹ تھانے میں‌ درج ہوا جس میں‌ فیض الرحمان کو نامزد کیا گیا تھا، اہل خانہ نے پولیس کی جانب سے درج کی جانے والی ایف آئی آر کو مسترد کردیا۔ مقتول کے بھائی یاسر کا کہنا تھا کہ افضل کا تھانے کے سامنے قتل ہوا پھر بھی قاتل فرار ہوگئے۔

یہ بھی پڑھیں: افضل کوہستانی کی قتل سے چند گھنٹے قبل کی ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی

اُن کا کہنا تھا کہ پولیس نے بھانجے پر ہی قتل کا الزام عائد کر کے اُس کو مقدمے میں نامزد کردیا جبکہ وہ بالکل بے گناہ ہے کیونکہ ہمیں یقین ہے فیض الرحمان اس طرح کی کوئی حرکت نہیں کرسکتا۔ یاسر نے اعلان کیا کہ جب تک پولیس ٹھیک ایف آئی آر درج نہیں کرتی ہم میت لے کر نہیں جائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں