آغا خان اسپتال انتطامیہ کا شرجيل ميمن کے خون کے نمونے کی تصديق سے انکار -
The news is by your side.

Advertisement

آغا خان اسپتال انتطامیہ کا شرجيل ميمن کے خون کے نمونے کی تصديق سے انکار

کراچی : آغا خان يونيورسٹی اسپتال انتطامیہ نے شرجيل ميمن کے خون کے نمونے کي تصديق سے انکار کردیا ہے، انتظامیہ کا کہنا ہے کہ اس کا علم نہیں کہ خون کے نمونے شرجيل ميمن کے ہيں يا نہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما و رکن صوبائی اسمبلی سندھ شرجیل میمن کے کمرے سے شراب کی بوتلیں برآمد ہونے کے معاملے میں نیا موڑآگیا۔

شرجیل میمن کے خون کی تصدیق کرنے والی آغا خان اسپتال لیبارٹری انتظامیہ نے اس بات کی تصدیق کرنے سے انکار کردیا ہے کہ جس خون کا ٹیسٹ کیا گیا ہے آیا وہ شرجیل میمن کا ہے بھی یا نہیں کیونکہ مذکورہ خون کے نمونے ضياءالدين اسپتال کی جانب سے بھيجے گئےتھے۔

آغاخان اسپتال کے کسی ملازم نے خود شرجیل میمن کے خون کے نمونے نہیں لئے تھے، اپنے جاری اعلامیے میں اسپتال انتظاميہ کا مزید کہنا ہے کہ آغا خان اسپتال کو ضیاءالدین اسپتال سے یکم ستمبرکی رات12بج کر3منٹ پرخون کا سیمپل ملا۔

مزیدپڑھیں: شرجیل میمن کی شراب کی بوتلوں کی ٹیسٹ رپورٹ جعلی ثابت، سرعام ٹیم نے بھانڈا پھوڑ دیا

واضح رہے کہ اس قبل اے آر وائی نیوز کے پروگرام سرعام کی ٹیم نے شرجیل میمن کی شراب کی بوتلوں کی رپورٹ کو جھوٹا ثابت کردیا ہے۔

میزبان اقرار الحسن کا کہنا ہے کہ سندھ لیبارٹری میں ایسی کوئی مشین یا کمیکل سرے سے موجود ہی نہیں ہے کہ جس کے ذریعے کسی بھی چیز کا ٹیسٹ کیا جائے، ایگزامنر نے چکھنے کے بعد رپورٹ مرتب کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں