مریم نواز تصادم کی طرف جارہی ہیں، انھیں سات یا دس سال کی سزا ہوگی: اعتراز احسن Aitzaz Ahsan
The news is by your side.

Advertisement

مریم نواز تصادم کی طرف جارہی ہیں، انھیں سات یا دس سال کی سزا ہوگی: اعتراز احسن

لاہور: پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما اعتراز احسن نے کہا ہے کہ مریم نوازپارٹی کوتصادم کی طرف لےجارہی ہیں، انھیں سات یادس سال کی سزاہوگی.

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اے آر وائی کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں‌ گفتگو کرتے ہوئے کیا. ان کا کہنا تھا کہ نوازلیگ کے سارے ووٹ اب مریم کے ووٹ ہیں، اب مریم نواز لیگی امیدواروں کو ٹکٹ دیں گی.

انھوں نے ن لیگ پر تنقید کرتے ہوئے ہوا کہا کہ یہ کبھی بالادست طاقتیں، کبھی ان دیکھےہاتھ کہتےہیں، یہ سراسر منافقت ہے، یہ نام یوں نہیں لیتے کہ انھیں‌ ڈر ہے.

اعتراز احسن نے کہا کہ صادق سنجرانی کوسیکرٹ بیلٹ سےووٹ ملے، مولانا نہیں، ن لیگ کےاپنے بندے ٹوٹے، راجا ظفرالحق ن لیگ کےاوپننگ امیدوارنہیں تھے. نواز شریف کے مقابلے میں آصف زرداری کا دل بہت بڑاہے، میں نے بغاوت کی، پھربھی مجھے سینیٹر بنایا گیا۔

انھوں نے رضا ربانی سے متعلق کہا کہ انھیں چیئرمین بننا چاہیے تھا، مگر ہم نوازشریف کے ساتھ مل کر چیئرمین نہیں بنانا چاہتے تھے، یہ سیاسی فیصلہ تھا، رضاربانی نےفیصلہ خوش دلی سے اسے قبول کیا، نوازشریف اگرپہلےاعلان نہ کرتے تو رضاربانی چیئرمین بن جاتے. فرحت اللہ بابر کے بیانیےسےاتفاق کرتاہوں، انھوں نے کافی پہلے استعفیٰ دیا تھا، انھیں کسی وجہ سے نہیں ہٹایا.


اقامہ منی لانڈرنگ سے بڑا جرم ہے، نواز شریف پرآرٹیکل 6 لگنا چاہیے: اعترازاحسن


اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ نوازشریف، مریم نوازنے اب انتہا کردی، مریم نوازکاجلسےمیں ترازولانا عدلیہ پرحملہ ہے، ترازومیں جو پلڑا جھکا ہوا تھا، اس میں نوازشریف بیٹھا ہے، عدالتیں نوازشریف کےساتھ نرمی برت رہی ہیں، میاں صاحب نے خودکش جیکٹ پہنی ہوئی ہے، نوازشریف نےعدالتوں کومتنازع کردیاہے، ججز پر دباؤ ہے۔


شہبازشریف کےخوف سےنوازشریف بھی سعودیہ چلےگئے‘ اعترازاحسن


انھوں نے کہا کہ شہبازشریف، چوہدری نثارسمیت موٹروےکا مشورہ دینے والے آؤٹ آف دی گیم ہیں، ووٹ مریم نواز کا ہے، مگر وہ تصادم کی طرف جارہی ہیں۔ مریم نوازکو 7 یا 10 سال کی سزا ہوگی، مریم نوازکو ہتھکڑی نہیں لگے گی، یہ اپیل کرکے10 دن میں باہرآجائیں گے، ان کی خواہش ہے کہ 60 سے 70 ہزارافراداڈیالہ جیل کے باہر ان کااستقبال کریں.


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں