site
stats
اہم ترین

آزادکشمیر الیکشن،غیرسرکاری نتائج، مسلم لیگ ن کو واضح برتری حاصل

مظفرآباد: آزاد کشمیر میں قانون سازاسمبلی کے انتخابات کے نتائج آنا شروع ہو گئے ہیں،غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق 41 میں سے 28 نشستیں مسلم لیگ ن نے حاصل کر کے واضح اکثریت حاصل کرلی ہے.

تفصیلات کے مطابق آزاد کشمیر میں قانون ساز اسمبلی میں انتخابات کے لیے مسلم لیگ ن، پیپلزپارٹی اور پی ٹی آئی میں کانٹے دار مقابلوں کے نتائج تیزی سے موصول ہونے ہورہے ہیں،41 حلقوں کے لیے ہونے والے الیکشن میں اب تک 34 حلقوں کے نتائج موصول ہو چکے ہیں،غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق 41 میں سے 28 نشستوں میں کامیابی حاصل کر کے مسلم لیگ ن سر فہرست جماعت بن گئی ہے جب کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف دو دو نشستوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر براجمان ہیں‌ اور مسلم کانفرنس و آزاد امیدوار ایک ایک نشست حاصل کر پائے ہیں.

آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کی اکتالیس نشستوں پر براہ راست آج انتخاب ہورہے ہیں،بارہ نشستوں میں سے نو پنجاب، دو سندھ اور ایک خیبر پختونخوا کی نشست بھی شامل ہے.
مہاجرین کےلیے مختص نشست ایل اے تیس جموں سندھ، بلوستان کے تمام اضلاع سمیت پنجاب کے دس اضلاع میاں چنوں،جھنگ، سرگودھا، میانوالی، ملتان، خوشاب، شیخوپورہ، ننکانہ، خانیوال، اوکاڑہ پر مشتمل ہے۔

ایل اے چھتیس کشمیر ویلی پر نو امیدوار آمنے سامنے ہیں، یہ حلقہ سندھ اور کوئٹہ پر مشتمل ہے، کراچی میں اس حلقے کےلیے سترہ پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں جبکہ کوئٹہ سمیت بلوچستان کے چھ اضلاع میں آٹھ پولنگ اسٹیشن قائم کر دئیے گئے.

چنیوٹ میں کشمیریوں کےلیے دو پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے ہیں،چکوال میں بھی دو نشستوں کےلیے آٹھ پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں،جہلم میں دو حلقوں کےلیے 26 پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے ہیں

الیکشن کے لیے پولنگ صبح آٹھ بجے سے شام پانچ بجے تک بلاتعطل جاری رہےگی،انتخابات کے لیے پانچ ہزار چار سو ستائیس پولنگ اسٹیشنز اور آٹھ ہراز چھیالیس بولنگ بوتھ قائم کیے گئے ہیں.

انتخابات کے کے لیے سیکورٹی کے لیے فوج ایف سی،پولیس کے 37ہزار پانچ سو اہلکار تعینتات ہیں،جبکہ 14 حلقےحساس قرار دیے گئے ہیں.

*آزاد کشمیر کے الیکشن کون کہاں کھڑا ہے

واضح رہے کہ انتخابات میں 26لاکھ 74 ہزار 586 افراد ووٹ کا حق رائے دہی استعمال کریں گے،جبکہ دس حساس اضلاع کی مانیٹرنگ کے لیے جدید کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے.

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top