The news is by your side.

Advertisement

امریکا نے اخوان المسلمون کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کا فیصلہ کرلیا

واشنگٹن: امریکا کی ٹرمپ انتظامیہ مصر کی قدیم مذہبی وسیاسی، مگر کالعدم جماعت الاخوان المسلمون کو ایک غیرملکی دہشت گرد تنظیم قرار دینے پر کام کررہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کی جانب سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ اخوان المسلمون کو جلد دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا جائے گا، اس کے بعد یہ مصری تحریک امریکی پابندیوں کی زد میں آجائے گی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق وائٹ ہاﺅس کی پریس سیکریٹری سارہ سینڈرس نے ایک بیان میں کہا کہ صدر ٹرمپ نے اپنی قومی سلامتی کی ٹیم اور خطے میں اپنے ہم خیال لیڈروں سے اس موضوع پر مشاورت کی ہے۔

اب الاخوان المسلمون کو دہشت گرد قرار دینے کے لیے داخلی سطح پر کام جاری ہے۔

واضح رہے کہ عبدالفتاح السیسی نے مسلح افواج کے سربراہ کی حیثیت سے جولائی 2013 میں الاخوان المسلمون سے تعلق رکھنے والے ملک کے پہلے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی حکومت کا تختہ الٹ دیا تھا اور اس کے ردعمل میں احتجاج کرنے والے اسلام پسندوں کے خلاف کئی ماہ تک سخت کریک ڈان کیا تھا۔

اس کے ایک سال بعد عبدالفتاح السیسی پہلی مرتبہ ملک کے صدر منتخب ہوئے تھے، خیال رہے کہ الاخوان المسلمون کو دہشت گرد قرار دینے کے لیے داخلی سطح پر کام جاری ہے۔

امریکا کی پولیٹیکل سیکیورٹی سینیٹر کی جانب سے ایرانی پاسداران انقلاب کو دہشت گرد قرار دینے کے فیصلے کی تائید کرتے ہوئے گذشتہ ماہ ٹرمپ سے اخوان المسلمون کو بھی دہشت گرد قرار دینےکا مطالبہ کیا تھا۔

امریکا کی پولیٹیکل سیکیورٹی سینیٹر کا اخوان کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کا مطالبہ

یاد رہے کہ دسمبر 2013 میں مصری کی عبوری حکومت نے سابق صدر محمد مرسی کی جماعت اخوان المسلمون کو دہشت گرد قرار دے دیا تھا، عبوری حکومت کی جانب سے اخوان المسلمون کو حکومت مخالف مظاہروں، بم دھماکوں اور دیگر تشدد کے واقعات کے بعد دہشت گرد جماعت قرار دیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں