The news is by your side.

Advertisement

کرپشن کیسز : اکرم درانی سے تفتیش مکمل، 12 نومبر کو دوبارہ طلب

اسلام آباد : اپوزیشن مذاکراتی کمیٹی کے سربراہ اکرم درانی نے نیب کے سامنے پیش ہوکر بیان ریکارڈ کرادیا ، جس کے بعد نیب نے انھیں 12نومبر کو دوبارہ طلب کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن مذاکراتی کمیٹی کےسربراہ اکرم درانی نیب راولپنڈی کےدفتر میں پیش ہوئے ، نیب ذرائع کا کہنا تھا کہ اکرم درانی سے تین کرپشن کیسز اثاثہ جات، غیر قانونی بھرتیوں اور پلاٹس کی الاٹمنٹ پر تفتیش ہوگی۔

تفتیش کے دوران اکرم خان درانی سے نیب نے سوالات کئے کہ آپ نےحلقےکے 70 لوگوں کو جعلی ڈومیسائل پر وزارت میں بھرتی کیا ؟ وزارت ہاؤسنگ کے افسران نے جعلی ڈومیسائل پر بھرتیاں کیں؟ بھرتی ہونے والے لوگ آپ کے حلقے سے تھے؟

اکرم درانی نے جواب دیا کہ مولانا مارچ کے دھرنے کی وجہ سے نشانہ بنایا جارہا ہے ، وزارت میں بھرتیوں سے براہ راست تعلق نہیں، وزارت ہاؤسنگ میں خالی اسامیوں پرمیرٹ میں بھرتیاں کی گئیں۔

اپوزیشن کی مذاکراتی کمیٹی کے سربراہ اکرم درانی سے تفتیش مکمل کرکے نیب راولپنڈی نے انھیں جانے کی اجازت دے دی اور 12 نومبر کو دوبارہ طلب کرلیا ہے۔

یاد رہے کہ دو روز قبل اسلام آباد ہائی کورٹ نے اکرم درانی کی ضمانت میں 21 نومبر تک توسیع کرتے ہوئے نیب کو جواب جمع کرانے کا حکم دیا تھا۔

مزید پڑھیں : اکرم درانی کی ضمانت میں 21 نومبر تک توسیع

اکرم درانی کا کہنا تھا کہ میرے اثاثے سب کےسامنے ہیں، اداروں کو چیلنج کرتا ہوں میرے اثاثوں کی چھان بین کریں جوکچھ میرے پاس ہے وہ میرا اپنا ہے اور وراثت سے ملا ہے، 85 سالہ بوڑھی ماں سےبھی نیب نےتفتیش شروع کردی ہے۔

خیال رہے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں گرفتاری سے بچنے کے لیے جمیعت علماء اسلام ف کے رہنما اور سابق وزیر اکرم درانی کے بیٹے اور داماد نے بھی ضمانت حاصل کر رکھی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں