site
stats
عالمی خبریں

القاعدہ کے سربراہ نے افغان طالبان کے نئے امیر کی بیعت کا اعلان کردیا

قاہرہ: عالمی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے سربراہ ایمن الظواہری نے افغان طالبان کے نئے سربراہ مولوی ہیبت اللہ اخونزادہ کی بیعت کا اعلان کردیا۔

دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے لیڈر ایمن الظواہری نے چودہ منٹ کے ایک آڈيو پیغام میں افغان طالبان کے نئے امیر کے لئے اپنی حمایت کا اظہار کیا، جس کی تقرری طالبان سربراہ ملا اختر منصور کے ڈرون حملے میں ہلاک ہونے کے بعد گزشتہ ماہ کی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ 2011 میں پاکستان کے ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کے مارے جانے کے بعد الظواہری کو القاعدہ کے اہم عہدے پر مقرر کیا گیا تھا۔

ایمن الظواہری نے کہا، ‘ جہادی تنظیم القاعدہ کے سربراہ کی حییت سے میں ایک بار پھر نئے افغان سربراہ کی بیعت کا اعلان کرتا ہوں اور ساتھ ہی مسلمانوں کو امارت اسلامیہ کے قیام کے لیے اسامہ بن لادن کے نقطہ نظر کی حمایت کی دعوت دیتا ہوں’۔

واضح رہے کہ افغانستان میں 1996 سے 2001 کے دوران افغان طالبان نے افغانستان میں اپنی حکومت امارت اسلامیہ قائم کی تھی اور وہ ایک مرتبہ پھر ملک کا کنٹرول حاصل کرنے کے لیے جنگ میں مصروف ہیں۔

ایمن الظواہری کی مذکورہ آڈیو ریکارڈنگ کی فوری طور پر تصدیق نہیں ہوسکی۔

اسامہ بن لادن کے بعد جب سے القاعدہ کی سربراہی ایمن الظواہری کے حصے میں آئی، القاعدہ کو شدت پسند تنظیم داعش کی جانب سے مسلسل شکست کا سامنا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top